Monday , June 26 2017
Home / مضامین / مسلمانوں کیلئے بجٹ میں خوشخبری اور تحفظات بہت جلد حاصل ہوں گے

مسلمانوں کیلئے بجٹ میں خوشخبری اور تحفظات بہت جلد حاصل ہوں گے

محمد علیم الدین
تلنگانہ راشٹرا سمیتی کے حرکیاتی قائد اور ہر طبقہ کے عوام میں مقبول ریاستی وزیر آبپاشی ٹی ہریش راؤ ریاست تلنگانہ کی ترقی میں دن رات جدوجہد کررہے ہیں۔ ریاست کی ہر شبہ میں ترقی کے علاوہ ہر طبقہ کی ترقی کو ہریش راؤ اولین ترجیح دے رہے ہیں۔ چیف منسٹر کی جانب سے دی گئی وزارت سے بھرپور انصاف کرتے ہوئے تلنگانہ کو سرسبز و شاداب بنانے میں جٹ گئے ہیں اور مسلمانوں کے ہردلعزیز قائد کی شناخت حاصل کرنے والے ہریش راؤ اپنی بات میں کہاکہ وہ مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی فراہمی اور اس کو یقینی بنانے کے لئے چیف منسٹر کو منوالیں گے۔ ہریش راؤ ایک خصوصی ملاقات میں سیاست نیوز سے بات کررہے تھے۔ اس دوران انھوں نے تلنگانہ عوام کی خواہشات اور حکومت سے وابستہ عوام کی تمناؤں کا اظہار کیا اور خاص کر مسلم طبقہ کے تعلق سے ان کا کہنا ہے کہ تحفظات مسلمانوں کی زندگی میں خوشحالی کا سبب بنیں گے اور کہاکہ مسلمانوں کی ترقی کا یہ واحد راستہ ہے۔ انھوں نے کہاکہ چیف منسٹر اور ٹی آر ایس پارٹی نے اس ضرورت کو محسوس کرتے ہوئے مسلمانوں سے وعدہ کیا تھا۔ انھوں نے 12 فیصد تحفظات کے لئے روزنامہ سیاست کی جانب سے چلائی گئی مہم کا تذکرہ کیا اور نیوز ایڈیٹر سیاست جناب عامر علی خاں کی کوششوں کی ستائش کی۔ انھوں نے کہاکہ سیاست نے ہمیشہ تعمیری رول ادا کیا ہے اور حکومت کو اپنی ذمہ داری کا احساس دلایا ہے۔ ریاستی وزیر آبپاشی نے کہاکہ تلنگانہ ریاست کی ترقی اور مثالی ریاست کی تشکیل کے لئے ہر طبقہ کی ترقی اور ہر شہری کی خوشحالی ضروری ہے جس کے بغیر ترقی اور خوشحالی ممکن نہیں۔ انھوں نے کہاکہ اگر کسی وجہ سے 12 فیصد تحفظات حاصل کرنے میں وقت لگتا ہے تو حکومت جاریہ سال کے بجٹ میں مسلمانوں کے لئے ٹھوس ایسے اقدامات کرے گی کہ مسلمان ترقی کی طرف آگے بڑھیں۔ تلنگانہ واحد ریاست ہے جس میں مسلمانوں کے لئے تقریباً 1200 کروڑ کا بجٹ مختص ہے۔عوام کے درمیان رہتے ہوئے اپنے حلقہ اور ریاست کے ہر حلقہ میں مقبولیت رکھنے والے ہریش راؤ کا کہنا ہے کہ انھیں دی گئی وزارت ایک اہم ذمہ داری ہے۔ ہندو مسلم عوام میں مقبول ہردلعزیز قائد اور عوامی مقبولیت کو حاصل کرنے والے ہریش راؤ کی خصوصیت یہ ہے کہ وہ ہمیشہ عوام کے درمیان رہنا پسند کرتے ہیں۔ عوامی خوشیوں اور تکالیف میں خوشی و غم بانٹنا اور عوامی مسائل کی یکسوئی میں ہمیشہ پیش پیش رہنا ان کی اہم خصوصیت ہے۔ وہ اپنے حلقہ کے ٹی آر ایس کیڈر کی نام سے واقفیت رکھتے ہیں۔ جو ان کی کامیاب قیادت کا اہم راز بھی سمجھا جاتا ہے۔ گزشتہ ڈھائی سال کے عرصہ میں انھوں نے اپنی وزارت کی ذمہ داری کو بخوبی انجام دینے میں کامیاب ثابت ہورہے ہیں اور ان کا اہم منصوبہ ریاست سے ضائع ہونے والے پانی کو محفوظ کرنا ہے جو سمندر میں شامل ہورہا ہے۔ ندی گوداوری کے ذریعہ ہر سال 3 ہزار ٹی ایم سی پانی سمندر میں ضائع ہورہا ہے۔ ریاست میں پائے جانے والے چھوٹے اور بڑے تقریباً 45 ہزار تالابوں کی مرمت کے لئے جاری مشن میں بھی ہریش راؤ نے اپنی کارکردگی سے مثالی اقدام کو انجام دیا ہے۔ ہر سال 10 ہزار تالابوں کی مرمت کا نشانہ مقرر کرتے ہوئے ڈھائی سال کے عرصہ میں انھوں نے 20 ہزار سے زائد تالابوں کی مرمت کو مکمل کرلیا ہے۔ ریاست میں گزشتہ سال ہوئی بارش پر اطمینان کے ساتھ کہاکہ یہ اللہ کی طرف سے تلنگانہ کی عوام پر رحمت اور نئی ریاست کی ترقی کے لئے کی گئی دعاؤں کی قبولیت کو نشانہ ہے اور کہاکہ اللہ کی اس رحمت پر شکر گزاری کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ اس رحمت سے استفادہ کیا جائے اور ایسا ہی اقدام جاری ہے۔ انھوں نے بتایا کہ ریاست تلنگانہ میں 30 ہزار سے زائد تالابوں کی سطح آب مکمل ہوچکی ہے۔ جبکہ 6 ہزار تالابوں میں 70 فیصد سے زائد پانی جمع ہوا ہے جو آئندہ فصل کے لئے بہت ہی مفید اور فائدہ بخش ہے۔ انھوں نے کہاکہ اب حکومت تالابوں میں اطمینان بخش سطح تک پہونچ چکے پانی سے بھی دوہرا فائدہ حاصل کرنا چاہتی ہے۔ ایک طرف فصلوں کے لئے استعمال تو دوسری طرف مچھلیوں کی افزائش جامع منصوبہ تیار کرلیا گیا ہے تاکہ مچھلی صنعت کو فروغ دیتے ہوئے مزید روزگار اور صنعت کے مواقع فراہم کئے جائیں جو سنہرے تلنگانہ کے خواب کو شرمندہ تعبیر کرنے کا ایک حصہ ہے۔ انھوں نے کہاکہ جن اضلاع میں قابل لحاظ بارش نہیں ہوئی اور پانی کا اوسط بطی قابل اطمینان ریکارڈ نہیں کیا گیا۔ محبوب نگر، کھمم اور رنگاریڈی اضلاع میں تیسرے مرحلے کے تحت تالابوں کی مرمت اور بالخصوص آبگیر راستوں کی صفائی و مرمت کے علاوہ انھیں کشادہ کرنے کے اقدامات کو ترجیح دی جائے گی۔ انھوں نے بتایا کہ حکومت کے اقدامات کے سبب جو ایک چیلنج کے طور پر انجام دیا گیا، اس کے سبب ساڑھے 9 لاکھ ایکر اراضی پر خریف کی فصلیں ممکن ہوپائی ہیں۔ ریاستی وزیر کا کہنا ہے کہ پانی کے ذخیرہ کے اقدامات کرنے کے ساتھ ساتھ پانی کی آمد کو بھی یقینی بنانے پر توجہ دی جارہی ہے اور اس 3 ہزار ٹی ایم سی پانی کو محفوظ کرنے کے اقدامات کئے جارہے ہیں جو گوداوری ندی سے سمندر میں شامل ہورہے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ پنگنگا، کالیشور اور دیوادولہ پراجکٹوں کے ذریعہ 3 ہزار ٹی ایم سی پانی کو محفوظ کرلیا جائے گا جس کے سبب 24 گھنٹے پانی کی فراہمی کے چیف منسٹر کے عوامی وعدے کی تکمیل کی جائے گی اور ریاست کی ترقی کو مثالی بنایا جائے گا۔ مسٹر ہریش راؤ کا کہنا ہے کہ ریاست کے مسلمان ترقی کے لئے جدوجہد کررہے ہیں اور اب تک کی حکومتوں نے مسلمانوں کو خوش کرتے ہوئے ان کا استحصال کیا ہے۔ انھوں نے مسلمانوں کو یقین دلاتے ہوئے کہاکہ ٹی آر ایس حکومت مسلمانوں کے ساتھ ایسا نہیں کرے گی جیسا کہ سابق میں ہوتا ہے۔ بلکہ مسلمانوں کی حقیقی ترقی کے لئے سنجیدہ اور ٹھوس اقدامات کو انجام دے رہی ہے۔ مسلم مذہبی جماعتوں اور مذہبی شخصیتوں میں شمولیت رکھنے والے ہریش راؤ کا کہنا ہے کہ مسلمان پارٹی کا ایک اہم حصہ ہے۔ اور مسلمانوں سے کئے گئے وعدوں پر ہرحال میں عمل آوری کی جائے گی۔ انھوں نے ریاست بھر میں 12 فیصد مسلم تحفظات کے لئے سیاست کی تحریک کو سلام کیا اور کہاکہ یہ تحریک حکومت کے لئے ایک رہنمائی کا سبب بنی ہے۔ ہریش راؤ ریاستی حکومت کی اسکیمات کے علاوہ مرکزی حکومت کی اسکیمات کی اپنے حلقہ میں عمل آوری کے لئے بھی منفرد شناخت رکھتے ہیں اور چیف منسٹر کے شانہ بہ شانہ عوامی ترقی کے لئے قدم سے قدم ملاکر چلتے ہیں۔ نوٹ بندی کے بعد نقد رقمی لین دین سے آزاد سماج کی تعمیر کے سبب ریاستی کابینہ میں تذکرہ کیا گیا تو ہریش راؤ نے چیف منسٹر کے فیصلے پر پہل کی اور اپنے حلقہ میں عمل آوری کے لئے خواہش کرتے ہوئے اپنی دلیرانہ قیادت کا ثبوت دیا۔ اس کے علاوہ مرکزی حکومت کے سوچ بھارت ابھیان کے تحت بیت الخلاء کی تعمیر کے سلسلہ میں اپنے حلقہ سدی پیٹ میں اس اسکیم پر صد فیصد عمل آوری کو یقینی بنایا۔ یہی وجہ ہے کہ ہریش راؤ نے حلقہ اسمبلی سدی پیٹ سے ہر مرتبہ اکثریت میں اضافہ کے ساتھ کامیابی حاصل کی۔ وزارت آبپاشی کے علاوہ اُمور مقننہ کی ذمہ داری کو نبھانے میں بھی انھوں نے اپنے طور پر ایک مثال قائم کی ہے۔ تمام سیاسی جماعتوں اور اہم اپوزیشن کے ساتھ تال میل کو برقرار رکھتے ہوئے اپوزیشن کا ایوان میں مقابلہ کرنا اور ایوان کی کارروائی کو مثالی انداز میں جاری رکھنے میں انھوں نے جو خدمات فراہم کی ہیں وہ ناقابل فراموش ہیں۔ ریاستی وزیر ہریش راؤ کی کارکردگی پر تلنگانہ کے مختلف گوشوں سے تعلق رکھنے والے عوام نے اطمینان بخش ردعمل ظاہر کیا۔ دیہی علاقوں کے خواتین نے تالابوں کی حالت زار کو دیکھ کر مثالی قرار دیا جبکہ ٹاؤن اور شہری علاقوں کے عوام ہریش راؤ کے اقدامات کو کافی پسند کرتے ہیں اور ہریش راؤ کو ہردلعزیز قائد کے علاوہ ایک  طاقتور سیاسی قائد تصور کیا جارہا ہے جو ہر طبقہ اور ہر فرد کی ترقی و بہبود و خوشحالی کے لئے کوشاں ہیں اور اس جانب مثالی اقدامات بھی کررہے ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT