Sunday , August 20 2017
Home / ہندوستان / مسلمانوں کے حق میں آواز بلند کرنے پر ہندو جرنلسٹ گرفتار

مسلمانوں کے حق میں آواز بلند کرنے پر ہندو جرنلسٹ گرفتار

نئی دہلی 14 مئی (سیاست ڈاٹ کام) دہلی پولیس نے مفروضہ آر ٹی آئی کا جواب شائع کرنے پر ایک جرنلسٹ پشپا شرما کو گرفتار کرلیا ہے جس میں یہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ مسلمانوں کے خلاف حکومت امتیاز برت رہی ہے اور وزارت ایوش میں یوگا ٹیچر کی حیثیت سے ان کے تقرر سے انکار کیا جارہا ہے۔ ایڈیشنل ڈی سی پی (ساؤتھ) نوپور پرساد نے بتایا کہ شرما کو دھوکہ دہی، جعلسازی اور مذہبی بنیادوں پر مختلف فرقوں میں نفرت پھیلانے کے الزام میں گرفتار کرلیا گیا اور ان کے خلاف کوٹلہ مبارک پور پولیس اسٹیشن میں ایک کیس درج کرلیا گیا۔ انھوں نے بتایا کہ اگرچیکہ شرما سے گزشتہ 3 یوم سے مسلسل پوچھ تاچھ کی گئی لیکن کل شام انھیں باقاعدہ گرفتار کرلیا گیا اور آج عدالت میں پیش کیا گیا۔ دریں اثناء ملی گزٹ کے چیف ایڈیٹر ظفرالاسلام خاں نے کہاکہ شرما کیخلاف کارروائی  آزادی صحافت کو کچلنے کی کوشش ہے اور یہ الزام عائد کیاکہ پریس کونسل آف انڈیا جرنلسٹوں کے حق میں آواز اٹھانے کے بجائے حکومت کی طرفداری کررہی ہے۔

 

جرنلسٹ قتل کیس میں
3 افراد سے پوچھ تاچھ
سیوان (بہار) 14 مئی (سیاست ڈاٹ کام) بہار کے سیوان ٹاؤن میں ایک ہندی جرنلسٹ کی ہلاکت کے سلسلہ میں پوچھ تاچھ کے لئے پولیس نے 3 افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔ پولیس سپرنٹنڈنٹ سہراب کمار شاہ نے بتایا کہ گزشتہ شب حراست میں لئے گئے 3 افراد کو مجرمانہ ریکارڈ اور جرنلسٹ راج دیو رنجن کے قتل کے بارے میں پوچھ تاچھ کی جارہی ہے۔ ابتدائی تحقیقات میں پتہ چلا ہے کہ یہ قاتل ہندی اخبار میں شائع خبروں (نیوز اسٹوریز) سے پریشان تھے۔ جبکہ سیوان ڈسٹرکٹ بیورو چیف رنجن نے یہ رپورٹس روانہ کی تھیں۔ انھوں نے بتایا کہ قتل کیس میں سراغ لگانے کے لئے سی سی ٹی وی فوٹیج اور جرنلسٹ کے موبائیل فون جانچ کی گئی جنھیں کل 8 بجے شام مصروف ترین اسٹیشن روڈ پر گولی مار دی گئی تھی۔ 45 سالہ رنجن کی آخری رسومات آج انجام دی گئیں۔ دریں اثناء چیف منسٹر نتیش کمار نے اس واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے حملہ آوروں کے خلاف سخت کارروائی کا حکم دے دیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT