Saturday , August 19 2017
Home / Top Stories / مسلمان ، امریکہ کا لازمی جزو : اوباما

مسلمان ، امریکہ کا لازمی جزو : اوباما

کلیولینڈ ۔  22 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صدر بارک اوباما نے آج ریپبلکن قائدین پر امریکی مسلمانوں کو خصوصی طور پر نشانہ بنانے پر زبردست تنقید کی اور کہا کہ مسلمان ہر دور میں امریکہ کا حصہ رہے ہیں۔ انہیں یکاوتنہا نہیں کیا جاسکتا اور انہیں (مسلمانوں) اس بات کا اندیشہ ہیکہ مٹھی بھر جنونیوں کے ذریعہ انجام دی جانے والی دہشت گردانہ کارروائیوں کا الزام کہیں ان کے سر نہ لگ جائے جو ان جنونیوں کے طرز فکر سے ہرگز متفق نہیں۔ وائیٹ ہاؤس میں عید ملاپ کی ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جس طرح تمام امریکی شہریوں کو دہشت گردی سے خطرات لاحق ہیں ان میں امریکی مسلمان بھی شامل ہیں۔ تاہم مسلمانوں کو اس وقت سب سے بڑی فکر یہ ہیکہ کہیں اسلام سے وابستہ چند مٹھی بھر جنونیوں کی حرکت سے پوری اسلامی برادری کو بدنام کیا جارہا ہے۔ القاعدہ اور دولت اسلامیہ جیسی دہشت گرد تنظیمیں دراصل مغرب کے خلاف جنگ نہیں کررہی ہیں بلکہ یہ جنگ انہوں نے مسلمان قوم پر تھوپ دی ہے جنہیں دنیا کے ہر ملک میں شبہ کی نظر سے دیکھا جارہا ہے جبکہ اسلام کے پیروکاروں کی تعداد اربوں میں ہے اور لازمی بات ہیکہ کسی بھی فرقہ یا مذہب کے تمام پیروکار بیک وقت دہشت گرد نہیں بن سکتے۔

TOPPOPULARRECENT