Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلمان شادیوں میں اسراف سے بچ کر متمول قوم بن سکتے ہیں

مسلمان شادیوں میں اسراف سے بچ کر متمول قوم بن سکتے ہیں

سادگی ایمان کی علامت ‘ تحفظات کی مہم میں شامل ہونے کا مشورہ ‘دوبدو پروگرام ‘جناب زاہد علی خاں و دیگر کا خطاب
حیدرآباد۔/13ستمبر، ( دکن نیوز) مسلم معاشرہ میں پائی جانے والی معاشی پسماندگی کو دور کرنے کا نسخہ خود ہمارے ہاتھ میں ہے اور عملی قدم اٹھا کر یہ کام انجام دیا جاسکتا ہے۔ آج مسلمان شادی میں بے جا رسومات سے لیکر گھوڑے جوڑے اور دعوتوں میں پُرتکلف ضیافتوں پر جو دولت ضائع کررہے ہیں اگر وہ ان سب کو ترک کرتے ہوئے اسلامی تعلیمات کے عین مطابق سادگی سے نکاح انجام دیں تو وہ دن دور نہیں جب مسلمانوں کا شمار بھی متمول ترین قوم میں ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار جناب زاہد علی خاں ایڈیٹر ’سیاست‘ نے کیا۔ انہوں نے کہا کہ شادی و بے جا رسومات میں اسراف کے بجائے یہ رقم ہم اپنی نئی نسل کی اعلیٰ تعلیم اور انہیں ترقی کے بھرپور مواقع فراہم کرنے پر خرچ کرسکتے ہیں، پھر اس کے مثبت اثرات سماج میں ظاہر ہونا شروع ہوجائیں گے۔ جناب زاہد علی خاں نے کہا کہ حیدرآباد میں مسلم شادیوں کا مسئلہ سنگین نوعیت اختیار کرتا جارہا ہے جس کے باعث معاشرہ میں اخلاقی گراوٹ اور معاشی بدحالی دن بہ دن بڑھتی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ کو صرف مسلمان حل کرسکتے ہیں۔ جناب زاہد علی خاں آج ایس اے ایمپریل گارڈن ( ٹولی چوکی ) میں والدین و سرپرستوں کے ایک پُرہجوم اجتماع کو مخاطب کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ دوبدو ملاقات پروگرام کا مقصد صرف رشتہ طئے کرنا نہیں ہے بلکہ مسلمانوں کی ان برائیوں کو دور کرنا ہے جسکے مظاہرے ہماری شادیوں میں دکھائی دیتے ہیں۔ اس کے علاوہ اس تحریک کا مقصد مسلم والدین کے انداز فکر میں اسلامی تعلیمات کی روشنی میں تبدیلی لانا ہے۔ انہوں نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ رشتوں کا انتخاب بھی ظاہری حسن و صورت، دولت و ثروت کی بنیاد پر کیا جارہا ہے جبکہ اللہ تعالیٰ نے دینداری کو معیار بنانے کا حکم دیا ہے۔ ہمارے پیارے نبیؐ نے نکاح کو آسان بنانے اور شادیوں میں اسراف سے بچنے کی تلقین کی ہے لیکن ہم اس کے برعکس نکاح کو پیچیدہ اور مشکل بنارہے ہیں۔ دوسری طرف بے پناہ فضول خرچی کے ذریعہ معاشرہ میں عدم توازن پیدا کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ رشتوں کے اس پروگرام کے ذریعہ ہمیں اُمید ہے کہ حالات تبدیل ہوں گے اور مستقبل میں مسلمان اپنی شادیوں اور ولیمہ کی تقاریب کا سادگی کے ساتھ اہتمام کریں گے۔          ( باقی سلسلہ صفحہ 6 پر )

TOPPOPULARRECENT