Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / مسلمان فلم اداکار، اسپورٹس مین اور نوبل انعام یافتگان ، ٹرمپ کس کس کو روکیں گے؟

مسلمان فلم اداکار، اسپورٹس مین اور نوبل انعام یافتگان ، ٹرمپ کس کس کو روکیں گے؟

مجھے یقین ہیکہ ڈیموکریٹک صدارتی امیدوار بن جاؤںگی : ہلاری کلنٹن
واشنگٹن ۔ 20 مئی (سیاست ڈاٹ کام) ڈیموکریٹک امکانی صدارتی امیدوار ہلاری کلنٹن نے آج اس بات کو یقینی طور پر کہا کہ وہ ڈیموکریٹک کی صدارتی امیدوار نامزد ہوجائیں گی۔ انہوں نے اپنے ری پبلکن حریف ڈونالڈ ٹرمپ کو ان کی (ٹرمپ) متعدد پالیسیوں پر تنقیدیں کیں۔ ڈونالڈ ٹرمپ نے مسلمانوں کے امریکہ آنے پر پابندی عائد کرنے کی بات کہی تھی، اس ریمارک کو ہلاری نے خصوصی طور پر نوٹ کرتے ہوئے ٹرمپ کو صدارتی عہدہ کیلئے ناموزوں شخصیت قرار دیا۔ سی این این سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ڈیموکریٹک کا صدارتی امیدوار نامزد ہونا تقریباً طئے ہے اور ایسا ہو ہی نہیں سکتا کہ انہیں نامزد کیا جائے۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ضروری ہیکہ 68 سالہ سابق وزیرخارجہ کو اب تک 2383 ڈیلی گیٹس کا جادوئی عدد حاصل نہیں ہوا ہے۔ تاہم 2293 ڈیلی گیٹس انہوں نے پہلے ہی حاصل کرلئے ہیں جو ان کیلئے مابقی دیگر ریاستوں میں شکست کے باوجود پارٹی کے صدارتی امیدوار نامزد کرنے کیلئے کافی ہوں گے۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ انہیں نامزد ہونے کا اس قدر یقین کیسے ہے تو اس کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ خود ان کا تجربہ ہے جس نے انہیں اس قدر بااعتماد بنایا ہے کیونکہ گذشتہ انتخابی مقابلوں میں انہوں نے لمحہ آخر تک اس وقت کے سینئر بارک اوباما سے مقابلہ کیا تھا۔

آخری 12 مقابلوں کے منجملہ انہیں (ہلاری) 9 مقابلوں میں کامیابی ملی تھی۔ 2008ء میں انہوں نے انڈیانا، کنیٹکی اور ویسٹ ورجینیا میں کامیابی حاصل کی تھی لہٰذا جیسے جیسے ہم انجام کی جانب بڑھتے ہیں ہمارے حامیوں کے جوش و خروش میں اضافہ ہوتا جاتا ہے۔ بہرحال اس وقت میں اور برنی سینڈرس یکساں ضوابط پر عمل کررہے ہیں۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا ٹرمپ امریکہ کے صدر بننے کے اہل ہیں تو ہلاری نے دوٹوک جواب دیتے ہوئے نفی میں سر ہلایا۔ ایک انٹرویو کے دوران ہلاری کلنٹن نے ٹرمپ کے ذریعہ گذشتہ ایک ہفتہ کے دوران دیئے گئے بیانات کی تنقید کی جہاں ٹرمپ نے نہ صرف برطانیہ کو نشانہ بنایا بلکہ نیوکلیئر توانائی کے حامل ملک شمالی کوریا کی ستائش کی۔ ناٹو سے امریکی افواج کے اخراج، دیگر ممالک کو بھی نیوکلیئر توانائی حاصل کرنی چاہئے۔ یہ سب وہ بیانات ہیں جس نے عوام کو سوچنے پر مجبور کردیا ہے کیونکہ یہ سب خطرناک نوعیت کے بیانات ہیں جس کے نتائج شاید عوام کو ہی بھگتنے پڑیں گے۔ ٹرمپ کے بیانات دہشت گردی کے خلاف امریکہ کی جنگ کو مزید مشکل اور پیچیدہ بنادے گی۔ مسلمانوں کو امریکہ آنے نہ دیا جائے، اس بیان سے مسلم اکثریتی آبادی والے ممالک چوکنا ہوجائیں گے کیونکہ یہ ایسے مسلم ممالک ہیں جن کے ساتھ کاندھے سے کاندھا ملاتے ہوئے امریکہ کو دہشت گردی کے خلاف لڑائی جاری رکھنی ہے۔ ٹرمپ کے بیانات سے ان مسلم ممالک کو غلط پیغام مل رہا ہے اور وہ امریکہ اور ٹرمپ کو عزت کی نگاہ سے نہیں دیکھ رہے ہیں۔ مسلمانوں میں بڑے بڑے تاجرین ہیں، فلم اداکار ہیں، اسپورٹس مین ہیں، نوبل انعام یافتہ شخصیتیں ہیں، لندن کے میئر ہیں، کیا ان سب پر امریکہ آنے کیلئے امتناع عائد کیا جاسکتا ہے۔ ٹرمپ کہتے ہیں کہ وہ لندن کے مسلم میئر صادق خان کو امریکہ آنے کی اجازت دیں گے جیسے مریکہ ٹرمپ کی جاگیر ہے۔ ان بیانات کا خود صادق خان نے بھی ترکی بہ ترکی جواب دیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT