Sunday , August 20 2017
Home / دنیا / مسلم برطانوی فلاحی تنظیموں میں دراندازی کی کوشش

مسلم برطانوی فلاحی تنظیموں میں دراندازی کی کوشش

جہاد اور دہشت گرد کارروائیوں کیلئے نوجوانوں کو بھرتی کرنا اور سرکاری فنڈس کا سرقہ‘ مقصد
لندن۔27ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) دہشت گرد گروپس کوشش کررہے ہیں کہ برطانیہ کی مسلم فلاحی تنظیمیں دراندازی کی کوشش کررہے ہیں تاکہ تشدد کو فروغ دیا جاسکے ۔ نوجوانوں کو جہاد کیلئے بھرتی کیا جاسکے اور انسداد دہشت گردی کیلئے مختص فنڈس سے اپنے لئے مالیہ حاصل کیا جاسکے ۔ ایک سرکاری نگرانکار تنظیم نے انتباہ دیا ہے کہ دہشت گردی اور انتہا پسندی بعض فلاحی تنظیموں کیلئے آج انتہائی مہلک خطرہ بن گئے ہیں ۔ فلاحی کمیشن کے صدرنشین ولیم شاکراس نے انتباہ دیا کہ شام میں بحران پر عوام کی جانب سے فراخدلانہ ردعمل ظاہر کیا گیا ہے لیکن یہ ردعمل فلاحی تنظیموں کیلئے ایک خطرہ بن گیا ہے جن کا استحصال ممکن ہے ۔ روزنامہ ٹیلیگراف کے بموجب انہوں نے کہا کہ بعض امدادی کارکن جو شامی اور عراق کا سفر کرچکے ہیں

دہشت گرد گروپس نے انہیں دیگر فلاحی تنظیموں کے کارکنوں کے ساتھ اپنی تنظیم میں شامل کرلیا ہے اور یہ لوگ اشیاء کا سرقہ کررہے ہیں اور ارکان عملہ کا اغوا کررہے ہیں ۔ کمیش نے انتباہ دیا ہے کہ انتہا پسندوں کے برطانیہ کی مسلم فلاحی تنظیموں میں دراندازی کے اندیشوں میں اضافہ ہوگیا ہے ۔ تازہ ترین اعداد وشمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ برطانیہ کی فلاحی تنظیموں کی کارروائیاں نمایاں طور پر سنگین واقعات اور فلاحی تنظیموں کو انتہا پسندوں اور دہشت گردوں کا نشانہ بنانے کی اطلاعات میں اضافہ کی وجہ سے فلاحی تنظیمیں انتہائی مخدوش حالت میں ہیں۔ کمیشن نے پولیس اور دیگر محکموں کو اُن فلاحی تنظیموں کی اطلاع بھی دے دی ہے جو مبینہ طور پر 2014 اور 2015ء کے درمیان انتہا پسندوں کا آلہ کار بن چکی ہیں ۔ اطلاع کے بموجب نگرانکار عہدیداروں نے فلاحی تنظیموں کے 80معائنے کئے اور پتہ چلایا کہ یہ تنظیمیں دہشت گردی اور انتہا پسندی سے متاثر ہونے کے اعتبار سے مخدوش حالت میں ہیں کیونکہ شام اور دیگر انتہائی خطرناک علاقوں میں کام کررہی ہیں ۔ بنیاد پرست مقررین کو ان کی تقریبات سے خطاب کرنے کیلئے مدعو کیا جاتا ہے ۔ تحقیقات کا آغاز کردیا گیاہے تاکہ فلاحی تنظیموں کو مؤثر انداز میں باقاعدہ بنایا جاسکے ۔ صدر نشین کمیشن نے کہا کہ ایسی 50سے زیادہ تحقیقات اور تخمینے 2014-15ء کے درمیان ہزاروں فکربند افراد سے کئے ہوئے سروے پر مشتمل ہے ۔ انتہا پسند اور دہشت گردی فلاحی تنظیموں کا اپنے مقاصد کیلئے استحصال کررہے ہو ۔ 2014-15ء کے دوران انتہائی سنگین نوعیت کے 11واقعات پیش آچکے ہیں جو گذشتہ سال کی بہ نسبت زیادہ ہیں ۔ گذشتہ سال ایسے صرف 7واقعات ہوئے تھے ۔
چین میںپُل ٹوٹنے سے دو ٹرک منجمدجھیل پر گرگئے‘ایک زخمی
بیجنگ۔27 ڈسمبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)  چین میں پُل ٹوٹنے سے دو ٹرک منجمد دریا پر گرگئے ۔ حاثہ میں کوئی ہلاک نہیں ہوا ۔ یہ حادثہ فویو کاؤنٹی میں پیش ایا جہاں 60میٹر لمبا پُل درمیان سے ٹوٹ گیا ۔  یہ پل ایک دریا پر بنا تھا جس کا پانی شدید سردی کی وجہ سے جم چکا ہے ۔ حادثہ کے باعث ٹرک میں آگ لگ گئی اور ایک شخص زخمی ہوگیا جسے اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT