Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلم بستیاں بارش کے مسائل سے دوچار، دادرسی کے دوران مجلس کی رکاوٹ

مسلم بستیاں بارش کے مسائل سے دوچار، دادرسی کے دوران مجلس کی رکاوٹ

رکن اسمبلی راجندر نگر پرکاش گوڑ کے ساتھ مجلس کے حواریوں کی بحث، دو کارپوریٹرس گرفتار
حیدرآباد۔ 24ستمبر(سیاست نیوز) حلقہ اسمبلی راجندر نگر میں موجود مسلم علاقوں سے مقامی رکن اسمبلی کو دور رکھتے ہوئے ان بستیوں کی ترقی میں رکاوٹ پیدا کرنے کی کوششوں کا آج خود رکن اسمبلی راجندر نگر مسٹر پرکاش گوڑ نے انکشاف کیا اور اس کا عملی مظاہرہ اس وقت ہوا جب مسٹر رکن اسمبلی نے اپنے حلقہ کی مسلم بستیوں کا دورہ کرتے ہوئے عوام کو بارش کے سبب درپیش مسائل کے حل کیلئے پہنچے تھے اور انہیں مجلسی کارکنوں نے کارپوریٹرس کے ہمراہ احتجاج کرتے ہوئے روکنے کی ناکام کوشش کی۔مسٹر پرکاش گوڑ جب اندرا نگر‘ بابا نگر‘ حسن نگر میں مساجد و گھروں میں پانی داخل ہونے کی شکایات موصول ہونے ہونے اور چیف منسٹر کی جانب سے رات دیر گئے ہدایت ملنے پر حسن نگر پہنچے تو مقامی جماعت سے تعلق رکھنے والے کارپوریٹرس نے اپنے چند حواریوں کے ہمراہ راستہ روک کر گالی گلوچ اور واپس جانے کا مطالبہ کرنے لگے جس پر مسٹر پرکاش گوڑ نے برہم ہوکر دریافت کیا کہ کیا وہ ان علاقوں میں ترقیاتی کام نہیں چاہتے جہاں مسلم آبادیاں ہیں ؟ اس کے باوجوداحتجاج میں شامل افراد کی جانب سے انہیں اور ٹی آر ایس کارکنوں کی جانب سے روکنے کی کوشش کی گئی جس پر پولیس نے مداخلت کرتے ہوئے مجلس کے دو کارپوریٹرس اور چند کارکنوں کو حراست میں لے لیا ۔ بعد ازاں مسٹر پرکاش گوڑ نے ان علاقوں کا ٹی آر ایس کارکنوں کے ہمراہ دورہ کرتے ہوئے مسائل سے واقفیت حاصل کی جہاں غریب عوام کے مکانات کے علاوہ مساجد میں پانی داخل ہو گیا تھا۔ بعد ازاں انہوں نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اب حد ہو چکی ہے اور وہ اس سلسلہ میں چیف منسٹر مسٹر کے چندرشیکھر راؤ سے بات چیت کریں گے اور اس بات کی شکایت کریں گے کہ اس طرح کی بیجا مداخلت کے سبب حسن نگر‘ بابا نگر‘ اندرا نگر کی غریب مسلم آبادیوں میں ترقیاتی کام ٹھپ ہوتے جا رہے ہیں اور مجلسی قائدین رکاوٹ پیدا کرتے ہوئے مسلمانوں کی حالت کی ابتری کاسبب بن رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ مجلسی کارپوریٹرس چند حواریوں کے ساتھ اس طرح کی غنڈہ گردی کرتے ہوئے عوام کو ترقی سے محروم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ مسٹر پرکاش گوڑ نے بتایا کہ مذکورہ بستیوں میںغریب مسلمان بستے ہیں جن کی ترقی کے اقدامات بحیثیت رکن اسمبلی ان کی اپنی ذمہ داری ہے لیکن گذشتہ 6برس سے انہیں ان علاقوں کی ترقی سے روکا جارہا ہے اور ان علاقوں کو پسماندہ رکھا جا رہا ہے۔ انہوں نے ان علاقوں کی ترقی میں رکاوٹ پیدا کرنے والو ںکو مزید برداشت نہیں کیا جائے گا بلکہ اب انہیں اس بات کا احساس دلوایا جائے گا کہ وہ جن علاقوں کی نمائندگی کرتے ہیں ان علاقوں کی کیا صورتحال ہے ۔ مسٹر پرکاش گوڑ نے بتایا کہ بنجارہ ہلز میں رہنے والے غریب آٹو رکشا چلانے والے عوام کی تکالیف کو حل کرنے کے بجائے ان کے مسائل پر سیاسی فائدہ حاصل کرنے کی کوشش کررہے ہیں جو ناقابل برداشت ہے اور عوام کو ان سے چوکنا رہنا چاہئے ۔ رکن اسمبلی راجندر نگر نے کہا کہ جو لوگ انہیں مسلم علاقوں میںترقیاتی کاموں سے روک رہے ہیں وہ عوام دشمن عناصر ہیں جنہیں خود عوام سبق سکھائیں گے۔ انہوں نے مجلسی کارپوریٹرس کو مشورہ دیا کہ وہ مقامی رکن اسمبلی کی حیثیت سے ان سے تعاون حاصل کرتے ہوئے علاقہ کی ترقی کے اقدامات کریں نہ کہ عوام کی مشکلات کا سیاسی فائدہ حاصل کرتے ہوئے ان کی مشکلات میں اضافہ کرنے کی کوشش کریں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT