Thursday , June 29 2017
Home / Top Stories / مسلم تحفظات بل منظور، تلنگانہ اسمبلی و کونسل میں نئی تاریخ رقم

مسلم تحفظات بل منظور، تلنگانہ اسمبلی و کونسل میں نئی تاریخ رقم

سوائے بی جے پی تمام جماعتوں نے تائید کی، چیف منسٹر کا اظہار ِتشکر، تحفظات کی حد میں اضافہ کیلئے بھیک نہیں مانگیں گے، مرکز سے اُلجھنے بھی تیار، چندر شیکھر رائو کا عزم

محمد مبشر الدین خرم
حیدرآباد۔16اپریل۔ تحریک تلنگانہ سے مسلمانوں کی وابستگی اور روزنامہ سیاست کی جانب سے چلائی گئی12فیصد مسلم تحفظات کی تحریک کے ثمر آور نتائج برآمد ہوئے اور ریاستی اسمبلی و قانون ساز کونسل نے مسلم تحفظات میں اضافہ کے بل کو منظوری دیدی ۔تلنگانہ قانون ساز اسمبلی نے مسلم تحفظات کے تاریخ ساز بل کو بغیر کسی ترمیم کے منظوری دیدی۔ چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے 12فیصد مسلم تحفظات بل پیش کیا جس پر مباحث کے بعد قانون ساز اسمبلی نے اس بل کو منظوری دیدی۔ مباحث کے دوران بھارتیہ جنتا پارٹی کے سواء کسی اور جماعت نے مسلم تحفظات بل کی مخالفت نہیں کی بلکہ ریاستی حکومت کی جانب سے تحفظات کی فراہمی کے خلاف اٹھنے والی آوازوں اور قانونی رسہ کشی سے نمٹنے کے لئے حکمت عملی تیار کرنے کی تجاویز پیش کرتے ہوئے حکومت کو مشورہ دیا کہ ماہرین قانون کی ٹیم تشکیل دیتے ہوئے اس بل کو درپیش قانونی چیالنج سے بچنے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔ چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے تحفظات میں اضافہ کے بل کی حمایت کرنے والی تمام سیاسی جماعتوں کے قائدین سے اظہار تشکر کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے مسلمانوں اور قبائلی طبقات کے معاشی و تعلیمی موقف کا باریک بینی سے جائزہ لینے کے بعد ہی تحفظات میں اضافہ کا فیصلہ کیا ہے۔ چیف منسٹرنے بتایا کہ وہ تحفظات میں اضافہ کا فیصلہ اور اسمبلی میں پاس کئے گئے بل کے ساتھ مرکز سے رجوع ہوں گے لیکن وہ تحفظات کی حد میں اضافہ کی بھیک مانگنے نہیں جائیں گے بلکہ تحفظات کی حد میں اضافہ کیلئے مرکز سے الجھنے کیلئے بھی تیار ہیں۔ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ ریاستی حکومت نے تمام قانونی پہلوؤں کا جائزہ لینے کے بعد ہی اس بات کا فیصلہ کیا ہے کہ بی سی (ای) زمرہ میں 8فیصد کا اضافہ کیا جائے اور ایس ٹی تحفظات میں ایک فیصد کا اضافہ کیا جائے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT