Tuesday , September 26 2017
Home / اضلاع کی خبریں / مسلم تحفظات سے پہلے تقررات، ناانصافی

مسلم تحفظات سے پہلے تقررات، ناانصافی

نظام آباد میں ریاستی وزیر داخلہ نرسمہا ریڈی کو یادداشت
نظام آباد:6؍جنوری ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)وزیر داخلہ مسٹر نائنی نرسمہا ریڈی کے دورہ نظام آباد کے موقع پر صدر ضلع اقلیتی ڈپارٹمنٹ کانگریس سمیرا حمد نے عبود بن حمدان، مصطفی الکاف، سید اسلم کے ہمراہ وزیر داخلہ سے نمائندگی کرتے ہوئے 12 فیصد تحفظات کو فوری فراہم کرنے کیلئے بی سی کمیشن کا قیام عمل میں لانے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے وزیر داخلہ  نائنی نرسمہا ریڈی کو پیش کردہ تفصیلی یادداشت میں کہا کہ ٹی آرایس اقتدار میں آنے سے قبل مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی فراہمی کا اعلان کیا تھا لیکن اس خصوص میں ابھی تک کوئی اقدامات نہ کئے جانے کی وجہ سے مسلمانوں میں تشویش پائی جارہی ہے اور گذشتہ چند دنوں سے حکومت ملازمتوں کی بھرتی کیلئے اقدامات کرتے ہوئے مختلف محکمہ جات کی جانب سے اعلامیہ کی اجرائی عمل میں لائی جارہی ہے جس کی وجہ سے مسلمانوں کو زبردست نقصانات پیش آنے کے امکانات ہیں۔ بغیر تحفظات کے ملازمتوں کی بھرتی سراسر غلط قرار دیا۔ انہوں نے سدھیر کمیٹی کو تحفظات کی فراہمی کے کوئی اختیارات نہیں ہے لہذا فوری بی سی کمیشن کے قیام کیلئے اقدامات کرنے کی خواہش کی۔ وزیر داخلہ مسٹر نائنی نرسمہا ریڈی نے سمیر احمد کی جانب سے دی گئی یادداشت پرکہا کہ چیف منسٹر مسٹر چندر شیکھر رائو ہمیشہ جو کہتے وہ کر دکھاتے ہیں۔ مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی فراہمی کیلئے کمیشن کا قیام عمل میں لایا گیا ہے اور یہ کمیشن اپنا کام کررہا ہے لہذا مسلمانوں کواس مسئلہ پر شک و شبہات ظاہر کرنے کا کوئی سوال ہی نہیں اٹھتا اور حکومت اپنا کام دیانتداری کے ساتھ کرے گی۔

TOPPOPULARRECENT