Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلم تحفظات میں اضافہ سے فرقہ پرست قوتیں چراغ پا

مسلم تحفظات میں اضافہ سے فرقہ پرست قوتیں چراغ پا

اسمبلی میں تحفظات بل پر مباحث، رکن اسمبلی ٹی آر ایس جناب عامر شکیل کا خطاب

حیدرآباد۔16اپریل (سیاست نیوز) مسلمانو ںکی ترقی اور انہیں معاشی و تعلیمی اعتبار سے مستحکم بنانے میں چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے مسلم تحفظات میں اضافہ کا فیصلہ کرتے ہوئے جو تاریخی کارنامہ انجام دیا ہے اس سے فرقہ پرست قوتیں تکلیف میں مبتلاء ہونے لگی ہیں۔رکن اسمبلی تلنگانہ راشٹر سمیتی مسٹر عامر شکیل نے 12فیصد مسلم تحفظات بل پر اسمبلی میں جاری مباحث کے دوران یہ بات کہی۔انہوں نے مباحث میں حصہ لیتے ہوئے کہا کہ ریاست تلنگانہ بہبودی امور اور پسماندہ طبقات کیلئے انجام دیئے جانے والے فلاحی امور میں ملک کی سرفہرست ریاستو ںمیں شامل ہو چکی ہے ۔انہوں نے مسلم اور قبائیلی تحفظات بل کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ ملک بھر میں مسلمانو ںکی معاشی و تعلیمی حالت انتہائی ابتر ہے اور اس صورتحال سے مسلمانو ںکو نکالنے کیلئے ملک بھر کی مختلف کمیٹیوں کی جانب سے کی جانے والی سفارشات پر اب تک کسی حکومت نے من و عن عمل آوری نہیں کی بلکہ سابقہ حکومت نے وزیر اعظم کے 15نکاتی منصوبہ کو مؤثر طریقہ سے عملی جامہ نہیں پہنایا جس کے سبب حالات مزید ابتر ہوتے چلے گئے ۔جناب عامر شکیل نے چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کو مسلمانوں کا حقیقی ہمدرد قائد قرار دیتے ہوئے کہا کہ سچر کمیٹی ‘ مشرا کمیشن ہی نہیں بلکہ آزادی کے بعد سے کئی کمیشنوں اور کمیٹیوں نے مسلمانوں کی پسماندگی کا تذکرہ کیا لیکن ان کی جانب سے پیش کردہ سفارشات کو قبول نہیں کیا گیا لیکن آج ریاست کے مسلمانوں کے لئے یہ تاریخ ساز دن ہے کیونکہ تلنگانہ راشٹر سمیتی کی جانب سے کئے گئے انتخابی وعدہ کو عملی جامہ پہنایا جا رہا ہے اور مسلمانوں کی ترقی کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرتے ہوئے انہیں ترقی کے مواقع فراہم کئے جانے لگے ہیں۔ رکن اسمبلی بودھن نے اپنے خطاب کے دوران 1953 اور 1980میں بھوپال سنگھ کمیٹی کی رپور ٹ کے بھی حوالے دیئے اور کہا کہ کے سی آر نے جو جرأت کا مظاہرہ کیا ہے اس کے سبب فرقہ پرست بوکھلاہٹ کا شکار ہو چکے ہیں۔جناب عامر شکیل نے کہا کہ مسلمانوں میں 97فیصد عوام غریب ہیں اور معاشی پسماندگی کا شکار ہیں اسی لئے انہیں تحفظات کی فراہمی ناگزیر ہے۔

TOPPOPULARRECENT