Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلم تحفظات پر رہنمائی کے لیے سدھیر کمیشن سے کے سی آر کی خواہش

مسلم تحفظات پر رہنمائی کے لیے سدھیر کمیشن سے کے سی آر کی خواہش

رپورٹ کی پیشکشی کے باوجود کمیشن کا کام ختم نہیں ہوا ، چیف منسٹر کا ریمارک
حیدرآباد۔/13اگسٹ، ( سیاست نیوز) سدھیر کمیشن آف انکوائری نے مسلم تحفظات کے مسئلہ پر قانونی اور دستوری ماہرین سے مشاورت کے ذریعہ حکومت کی رہنمائی کا فیصلہ کیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے کمیشن کی رپورٹ حاصل کرنے کے بعد صدرنشین جی سدھیر ریٹائرڈ آئی اے ایس سے خواہش کی کہ وہ اپنی کارکردگی جاری رکھیں۔ چیف منسٹر نے کہا کہ رپورٹ کی پیشکشی کے ساتھ ہی یہ نہ سمجھا جائے کہ کمیشن کا کام ختم ہوچکا ہے۔ انہوں نے مشورہ دیا کہ کمیشن اپنی کارکردگی جاری رکھے اور تحفظات کی فراہمی کے سلسلہ میں مزید تجاویز پیش کرے۔ انہوں نے کارپوریشن سے خواہش کی کہ وہ ایڈوکیٹ جنرل اور ریاست کے دیگر ماہرین قانون سے بھی مشاورت کرتے ہوئے حکومت کی رہنمائی کرے۔ بتایا جاتا ہے کہ سدھیر کمیشن اس سلسلہ میں قانونی اور دستوری ماہرین کی فہرست تیار کررہا ہے جن سے مشاورت کا عمل جلد شروع کیا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق ایڈوکیٹ جنرل رام کرشنا ریڈی سے خواہش کی گئی کہ وہ ٹاملناڈو میں 50فیصد سے زائد تحفظات کی فراہمی کا جائزہ لیں تاکہ اسی طرز پر تلنگانہ میں بھی مسلمانوں اور درج فہرست قبائیل کے تحفظات میں اضافہ کیا جاسکے۔ ٹاملناڈو حکومت نے سپریم کورٹ کی جانب سے مقررہ تحفظات کی حد 50فیصد کو عبور کرلیا ہے اگرچہ یہ معاملہ سپریم کورٹ میں زیر دوران ہے تاہم ماہرین کا کہنا ہے کہ ٹاملناڈو میں 50 فیصد سے زائد تحفظات کو دستوری تحفظ فراہم کردیا جس کو ختم کرنا آسان نہیں ہے۔ واضح رہے کہ سدھیر کمیشن کی میعاد ستمبر میں ختم ہورہی ہے۔ دیکھنا یہ ہے کہ میعاد کی تکمیل سے قبل تحفظات کے سلسلہ میں مزید سفارشات کے حصول کیلئے آیا میعاد میں توسیع کی جائے گی۔؟

TOPPOPULARRECENT