Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلم تحفظات پر سدھیر کمیشن کی رپورٹ جلد پیش کرنے کی تیاریاں

مسلم تحفظات پر سدھیر کمیشن کی رپورٹ جلد پیش کرنے کی تیاریاں

حیدرآباد۔/12نومبر، ( سیاست نیوز) تلنگانہ میں مسلمانوں کو تحفظات کی فراہمی اور ہمہ جہتی ترقی کے سلسلہ میں سدھیر کمیشن آف انکوائری نے حکومت کو جلد رپورٹ پیش کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ کمیشن کے صدرنشین ریٹائرڈ آئی اے ایس عہدیدار جی سدھیر اور ارکان نے آج اس مسئلہ پر ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی سے ملاقات کی اور رپورٹ کی پیشکشی کے سلسلہ میں کمیشن کی پیشرفت سے واقف کرایا۔ محمد محمود علی نے کمیشن سے خواہش کی کہ وہ مقررہ مدت کے دوران حکومت کو جامع رپورٹ پیش کردے تاکہ مسلمانوں کی ترقی کے سلسلہ میں حکومت اقدامات کرسکے۔ انہوں نے کمیشن سے کہا کہ وہ مسلمانوں کو تحفظات کی فراہمی کے مسئلہ پر بھی حکومت کی رہنمائی کرے کیونکہ چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ 12فیصد مسلم تحفظات کے وعدہ کی تکمیل کے سلسلہ میں سنجیدہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کمیشن آف انکوائری کی رپورٹ کے بعد حکومت بیاک ورڈ کلاس کمیشن قائم کرے گی جو تحفظات کی فراہمی کا مجاز ہے۔

بتایا جاتا ہے کہ کمیشن آف انکوائری نے ڈپٹی چیف منسٹر کو بتایا کہ وہ نہ صرف تلنگانہ میں اقلیتوں کی سماجی، معاشی اور تعلیمی پسماندگی کا بذات خود جائزہ لے رہا ہے بلکہ سماج کے مختلف گوشوں سے نمائندگیاں بھی وصول کی جارہی ہیں۔ کمیشن نے بتایاکہ ملک کے مختلف نامور ماہرین اور اسکالرس کو مشاورت کیلئے حیدرآباد مدعو کیا جارہا ہے تاکہ کمیشن کی رپورٹ کی تیاری میں مدد حاصل کی جاسکے۔ مختلف کمیشنوں سے وابستہ ماہرین کو مشاورت کیلئے 17نومبر کو حیدرآباد میں اجلاس منعقد کیا گیا ہے۔ اس اجلاس میں بیرونی ریاستوں کے علاوہ تلنگانہ سے تعلق رکھنے والے ماہرین بھی شرکت کریں گے۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے کمیشن کی تیز رفتار پیشرفت پر اطمینان کا اظہار کیا اور خواہش کی کہ حکومت کو ایسی جامع رپورٹ پیش کی جائے جس کی بنیاد پر تحفظات کی فراہمی میں کوئی قانونی اور دستوری رکاوٹ پیدا نہ ہونے پائے۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت تحفظات کے مسئلہ پر ملک کے ممتاز ماہرین قانون و دستور سے ربط میں ہے کیونکہ مسلمانوں کے علاوہ درج فہرست قبائیل کو بھی تحفظات میں اضافہ کا وعدہ کیا گیا ہے۔

اسی دوران محمد محمود علی نے اقلیتی فینانس کارپوریشن کے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ آٹو رکشا اسکیم کی اہلیت رکھنے والے افراد کا انتخاب جلد از جلد مکمل کرلیں۔ انہوں نے اندرون دس یوم تمام مراحل مکمل کرنے کی ہدایت دی تاکہ چیف منسٹر کی موجودگی میں غریب مسلم مستحق افراد کو آٹو رکشا جاری کئے جاسکیں۔ حیدرآباد اور رنگاریڈی میں اس اسکیم کے تحت 1000افراد کو فائدہ ہوگا جس کے بعد اضلاع میں بھی اس اسکیم کو توسیع دی جائے گی۔ محمود علی نے کارپوریشن کو ہدایت دی کہ وہ شفافیت کے ساتھ اس اسکیم پر عمل آوری کو یقینی بنائیں۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ ہر ضلع میں 500آٹو رکشا جاری کرنے کا منصوبہ ہے تاکہ غریب مسلمانوں کی معاشی پسماندگی کو دور کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ آٹو اسکیم کے آغاز کے بعد کیاب ٹیکسی فراہم کرنے کی اسکیم زیر غور ہے۔ انہوں نے بتایا کہ چیف منسٹر نے غریب مسلمانوں کو چھوٹے کاروبار کے آغاز کیلئے بینک کے بغیر راست قرض کی اجرائی کی اسکیم تیار کرنے کی ہدایت دی ہے۔ اس اسکیم کے تحت کارپوریشن کے ذریعہ مستحق غریبوں کو راست قرض جاری کیا جائے گا تاکہ وہ اپنے پیر پر کھڑے ہوسکیں۔ اس اسکیم کے رہنمایانہ خطوط تیار کئے جارہے ہیں۔ محمد محمود علی عنقریب اقلیتی بہبود کے عہدیداروں کے ساتھ جائزہ اجلاس منعقد کرتے ہوئے اسکیمات پر عمل آوری اور بجٹ کے خرچ کا جائزہ لیں گے۔

TOPPOPULARRECENT