Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلم تحفظات پر نمائندگیاں ،سیاست کی تحریک کا خیرمقدم

مسلم تحفظات پر نمائندگیاں ،سیاست کی تحریک کا خیرمقدم

حافظ پیر شبیر احمد صدر جمعیۃ العلماء کی اپیل
حیدرآباد /11 ستمبر (سیاست نیوز) صدر جمعیۃ العلماء تلنگانہ و آندھرا پردیش حافظ پیر شبیر احمد نے سیاست کی جانب سے شروع کردہ 12 فیصد مسلم تحفظات تحریک کا خیرمقدم کرتے ہوئے جماعتی وابستگی سے بالاتر ہوکر تمام قائدین اور سماجی تنظیموں وغیرہ کو حکومت پر دباؤ ڈالنے کی اپیل کی ہے۔ انھوں نے کہا کہ مسلمان پسماندہ طبقات سے بھی پسماندہ ہیں، جس کا کئی کمیٹیوں کی رپورٹ سے انکشاف ہوچکا ہے، لہذا تحفظات مسلمانوں کا حق ہے، جس کو حاصل کرنے کے لئے سیاسی وابستگی سے بالاتر ہوکر اپنی اپنی ذمہ داری نبھانا چاہئے۔ انھوں نے کہا کہ جمعیۃ العلماء اس تحریک کی تائید و حمایت کرتی ہے اور تحریک کو کامیاب بنانے اور حکومت تک مسلمانوں کے جذبات پہنچانے کے لئے ذمہ دارانہ رول ادا کرے گی۔ انھوں نے بتایا کہ مسلمانوں میں شعور بیدار کرنے اور حکومت کی اسکیمات سے مسلمانوں کو فائدہ پہنچانے کے لئے ادارہ سیاست ہمیشہ پیش پیش رہا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ٹی آر ایس نے اپنے انتخابی منشور میں مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا وعدہ کیا، وعدہ کو نبھانے میں پہل بھی کی اور اس کے لئے ایک انکوائری کمیشن بھی تشکیل دی، مگر کمیشن کے پاس قانونی اختیارات نہیں ہیں، جب کہ کسی مذہب، طبقہ اور فرقہ کو بی سی تحفظات کی فہرست میں شامل اور خارج کرنے کا اختیار صرف بی سی کمیشن کو ہے۔ انھوں نے کہا کہ بی سی کمیشن کی سفارشات پر حکومت مسلمانوں کو تحفظات فراہم کرسکتی ہے اور اگر اتفاق سے ان سفارشات کو عدالت میں چیلنج بھی کیا جائے تو مسلم تحفظات کو کوئی نقصان نہیں ہوگا، کیونکہ بی سی کمیشن کو اس بات کا اختیار ہے۔ انھوں نے کہا کہ نئی ریاست تلنگانہ میں مسلمانوں کی تعداد میں قابل لحاظ اضافہ ہوا ہے، لہذا تازہ مردم شماری مسلمانوں کو تحفظات فراہم کرنے میں معاون ثابت ہوگی۔ انھوں نے کہا کہ تحفظات کے حصول کے لئے اپنے اتحاد کا ثبوت دینا چاہئے، لہذا سیاسی جماعتوں کے بشمول رضا کارانہ، مذہبی اور فلاحی تنظیمیں اس تحریک میں شامل ہو کر حکومت پر دباؤ ڈالیں۔ انھوں نے شروع کردہ تحریک پر شہری اور دیہی علاقوں میں مسلمانوں کے مثبت ردعمل کی ستائش کی۔

TOPPOPULARRECENT