Sunday , May 28 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلم تحفظات کے خلاف ریاست بھر میں بی جے پی کا احتجاج

مسلم تحفظات کے خلاف ریاست بھر میں بی جے پی کا احتجاج

شہر میں مظاہرے ، سنگباری ، آر ٹی سی بسوں کو نقصان، سینکڑوں کارکن گرفتار
حیدرآباد ۔ /13 اپریل (سیاست نیوز) بی جے پی نے آج حیدرآباد و تلنگانہ کے مابقی علاقوں میں مسلم تحفظات میں اضافہ کے خلاف ریاستی قانون ساز اسمبلی کی جانب سے بل کی منظوری کے خلاف احتجاج کیا ۔ بی جے پی کے تمام 5 ارکان اسمبلی جی کشن ریڈی ، کے لکشمن ، این وی ایس ایس پربھاکر ، سی ایچ رامچندرا ریڈی اور ٹی راجہ سنگھ کو اسمبلی کے خصوصی سیشن کے دوران احتجاج پر اسمبلی سے معطل کردیا گیا ۔ جس کے بعد اسمبلی احاطہ میں گاندھی مجسمہ کے سامنے وہ احتجاج کی کوشش کررہے تھے لیکن پولیس نے انہیں یہاں سے ہٹادیا ۔ بی جے پی ورکرس اسمبلی تک مارچ نکالنے کا منصوبہ رکھتے تھے ۔ پولیس نے انہیں حراست میں لے لیا ۔ کریم نگر میں بی جے پی کے سینکڑوں احتجاجیوں کو پولیس نے حراست میں لیا ۔ اسی دوران قانون ساز اسمبلی اور کونسل میں مسلم تحفظات بل کی منظوری کے پیش نظر آج ہندوبنیاد پرست تنظیموں سے وابستہ کئی کارکنوں نے شہر کے مختلف مقامات پر مظاہرے کئے اور آر ٹی سی بسوں کو نقصان پہونچایا ۔ بل کی منظوری کی کارروائی کے اعلان کے بعد حیدرآباد سٹی پولیس کل رات سے ہی چوکسی اختیار کئے ہوئے تھے اور آج شہر کے اہم مقامات پر پولیس گشت میں شدت پیدا کردی گئی تھی ۔ شہر کے مصروف ترین علاقے عابڈس میں آج بجرنگ دل کے کارکنوں نے مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی مخالفت کرتے ہوئے مظاہرے کئے جبکہ اسمبلی کے گیٹ کے قریب بھی بی جے پی اور اس کی دیگر تنظیموں نے احتجاج کیا ۔ پولیس نے شہر میں 200 سے زائد ہندو کارکنوں کی گرفتاری عمل میں لائی ۔ آج صبح 6.30 بجے دو موٹر سائیکل سوار نوجوانوں نے افضل گنج ڈپو سے وابستہ ایک آر ٹی سی بس پر سنگباری کرتے ہوئے اسے نقصان پہونچایا ۔ پولیس نے نوجوانوں کی گاڑی کو ضبط کرلیا اور ان کے خلاف ایک مقدمہ درج کرتے ہوئے ان کی تلاش شروع کردی ۔ اسی طرح عثمانیہ یونیورسٹی پولیس اسٹیشن حدود میں علاقہ مانیکیشوری نگر میں 5 نوجوانوں نے مشیرآباد ڈپو سے تعلق رکھنے والی آر ٹی سی بس ٹائر کی ہوا نکال دی ۔ ڈرائیور نے انہیں پکڑنے کی کوشش کی لیکن وہ وہاں سے فرار ہوگئے ۔ پولیس نے ایک مقدمہ درج کرلیا ہے ۔ بی جے پی ، بجرنگ دل ، وشواہندو پریشد ، بھارتیہ جنتایووا مورچہ اور دیگر ہندو تنظیموں کی جانب سے 12 فیصد تحفظات بل کی اسمبلی میں پیشکشی کے خلاف احتجاج و مظاہروں کی اطلاع پر پولیس نے دونوں شہروں میں سخت چوکسی اختیار کرلی تھی اور کئی مقامات پر پولیس پکٹس بھی متعین کئے گئے تھے ۔ ساؤتھ زون میں کل رات دیر گئے پولیس نے احتیاطی کارروائی کرتے ہوئے 100 سے زائد افراد کو حراست میں لے لیا تھا ۔ کمشنر پولیس مسٹر ایم مہیندر ریڈی نے بتایا کہ دونوں شہروں میں ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا اور حالات حسب معمول ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT