Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلم تحفظات کے لیے تلنگانہ مسلم ایڈوکیٹس فورم کی نمائندگی کامیاب

مسلم تحفظات کے لیے تلنگانہ مسلم ایڈوکیٹس فورم کی نمائندگی کامیاب

چیف منسٹر کے سی آر کا اقدام مثالی ، وحید احمد ایڈوکیٹ کا چیف منسٹر سے اظہار تشکر
حیدرآباد ۔ 19 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز) : اسٹیٹ سکریٹری ٹی آر ایس و صدر تلنگانہ مسلم ایڈوکیٹس فورم وحید احمد ایڈوکیٹ نے اسمبلی و کونسل میں 12 فیصد مسلم تحفظات بل کی منظوری کا خیر مقدم کرتے ہوئے اس کو چیف منسٹر کے سی آر کا دلیرانہ فیصلہ قرار دیا ۔ وحید احمد وقف بورڈ کے رکن نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت عہد کی پابند ہے ۔ چیف منسٹر نے مسلمانوں سے کیے گئے وعدے کو پورا کرتے ہوئے پھر ایکبار عملی ثبوت دیا ہے جو ناقابل فراموش ہے ۔ ملک کے تازہ حالات اور بی جے پی کی مخالفت کی پرواہ کیے بغیر ٹی آر ایس حکومت نے وعدے کی پابند ہونے کا ملک کے عوام کو مثبت پیغام پہونچایا ہے ۔ تلنگانہ مسلم ایڈوکیٹس فورم کی جانب سے بھی مسلم تحفظات کی فراہمی اور انتخابی منشور میں مسلم تحفظات کی شمولیت کے لیے ٹی آر ایس قیادت سے کامیاب نمائندگی کی تھی ۔ سدھیر کمیشن اور بی سی کمیشن کو مسلمانوں کی پسماندگی پر ٹھوس رپورٹس پیش کی تھی ۔ 12 فیصد مسلم تحفظات کی فراہمی کے لیے روزنامہ سیاست بالخصوص نیوز ایڈیٹر جناب عامر علی خاں کی مہم کے بھی مثبت نتائج برآمد ہوئے ہیں ۔ وحید احمد ایڈوکیٹ نے بی جے پی کی جانب سے تحفظات کو سیاسی رنگ دینے کی شدید مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ ٹی آر ایس نے مسلمانوں کو کوئی نئے تحفظات نہیں دئیے بلکہ ریاست میں مسلمانوں کو فراہم کئے جانے والے بی سی ای 4 فیصد تحفظات میں مزید 8 فیصد کی توسیع کی ہے ۔ سدھیر کمیشن اور بی سی کمیشن کی سفارشات پر عمل کرتے ہوئے بل کو قانونی موقف دیا گیا ہے ۔ جس کے مسلمان مستحق ہیں ۔ راجندر سچر کمیٹی نے مسلمانوں کو پسماندہ طبقات سے بھی پسماندہ قرار دیا گیا ہے ۔ مرلیدھر کمیشن نے مسلمانوں کو تحفظات فراہم کرنے کی مکمل وکالت کی ہے ۔ مسلمان ہندوستان کا اٹوٹ حصہ ہے ۔ جنگ آزادی میں دیگر ابنائے وطن کے ساتھ برابر کی قربانی دی ہے ۔ جب ملک میں سماج کے دوسرے طبقات کو تحفظات مل سکتے ہیں تو مسلمانوں کو کیوں نہیں دیا جاسکتا ہے ۔ جب کہ مسلمان بھی برابر کا ٹیکس ادا کررہے ہیں ۔ انہوں نے کے سی آر کی نیت پر شکوک کرنے والوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ کے سی آر جو عزم کرتے ہیں ۔ اس کو پورا کرتے ہیں 16 سال قبل جب تلنگانہ تحریک شروع کی گئی تھی تو ہر کسی نے اس کو نا ممکن قرار دیا تھا تاہم کے سی آر نے اپنی تحریک کو علحدہ تلنگانہ ریاست کی شکل میں پائے تکمیل تک پہونچایا ۔ 12 فیصد مسلم تحفظات کے معاملے میں بھی چیف منسٹر کے سی آر کے حوصلے بلند ہیں ۔ انہوں نے مرکز سے بھیک نہ مانگنے کا اعلان کیا ۔ دستور ہند کے شیڈول 9 میں ترمیم نہ کرنے کی صورت میں سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹانے کا اعلان کیا ہے ۔ کے سی آر جو ٹھان لیتے ہیں اس کو پورا کرتے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT