Friday , June 23 2017
Home / ہندوستان / مسلم راشٹریہ منچ کی دعوت افطار

مسلم راشٹریہ منچ کی دعوت افطار

اندریش کمار کے بابر ، طلاق ثلاثہ اور گاؤ ذبیحہ پر ریمارکس
لکھنؤ ۔ /15 جون(سیاست ڈاٹ کام) مندروں کے شہر ایودھیا میں افطار پارٹی منعقد کرنے کے دوسرے دن آر ایس ایس کے مسلم شعبہ مسلم راشٹریہ منچ نے پہلے مغل حکمراں بابر کو ملک میں جبری طور پر داخل ہونے والا حکمراں قرار دیا ۔ منچ کے سربراہ اندریش کمار نے افطار پارٹی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مغل حکمراں بابر منگول تھا اور وہ اپنے فوجی سربراہ میر باقی کے ساتھ ملک میں گھس کر عوام پر مظالم کئے ۔ بابر نے بھگوان رام کو زک پہونچائی ۔ بابر کو اسلام کے بارے میں کوئی واقفیت نہیں تھی اور میر باقی نے بھی اسلامی تعلیمات کی خلاف ورزی کی ۔ طلاق ثلاثہ کا حوالہ دیتے ہوئے اندریش کمار نے کہا کہ ماں کے قدموں کے نیچے جنت ہے ۔ طلاق کا مطلب اس جنت کو مسترد کرنا ہے ۔ انہوں نے یہ بھی دعویٰ کیا تھا کہ گاؤ ذبیحہ کی کسی بھی مذہب بشمول اسلام میں اجازت نہیں ۔ بعد ازاں اندریش کمار نے افطار پارٹی میں شرکت کی جہاں روزہ داروں نے گائے کے دؤدھ سے افطار کیا ۔ کل بھی ایودھیا میں منعقدہ افطار پارٹی میں مسلمانوں نے بیف نہ کھانے کا عہد کیا تھا ۔ اس کے علاوہ انہوں نے گائے کے دؤدھ کے استعمال سے اتفاق بھی کیا تھا ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT