Sunday , August 20 2017
Home / ہندوستان / مسلم ریزرویشن پر حکومت کی وعدہ خلافی

مسلم ریزرویشن پر حکومت کی وعدہ خلافی

ممبئی۔10۔اگست(سیاست ڈاٹ کام ) سچر کمیٹی ،رنگناتھ مشرا کمیشن اور محمودالرحمٰن کمیٹی کی مسلمانوں کو معاشی پسماندگی کی بنیاد پر ریزرویشن دینے کی سفارشات کے باوجود مہاراشٹر حکومت اس معاملے میں غیر سنجیدہ ہے ۔مالیگاؤں کے رکن اسمبلی آصف شیخ نے ودھان بھون کے باہر اخباری نمائندوں کو یہ بات بتائی۔مسلم ریزرویشن کے حصول کیلئے 2013 ء میں مالیگاؤں تا ممبئی پیدل مارچ کرنے والے نوجوان سیاسی لیڈر نے کہا کہ سابق حکومت کے ذریعے مراٹھوں کو16 فیصد مسلمانوں کو 5 فیصد ریزرویشن دیا گیا تھاجسے ہائی کورٹ میں چیلنج کیا گیا تب عدلیہ نے مراٹھا ریزرویشن مسترد کردیا تھااور مسلمانوں کیلئے اعلٰی تعلیم میں ریزرویشن درست قرار دیا تھا۔اُنھوں نے کہاکہ موجودہ حکومت عدلیہ کے فیصلے کو بھی نظر انداز کرکے لاکھوں غریب پسماندہ مسلم نوجوانوں کو حصول علم کے حق سے محروم کررہی ہے ۔رکن اسمبلی نے کہاکہ عدالت کے احکام کو نظرانداز کرنا اور غریب و پسماندہ مسلم نوجوانوں کو حصول علم اور حصول ملازمت کے حقوق سے محروم کرنا دستوری تیقنات کے برعکس ہے اور توہین عدالت کے مترادف ہے، جس کے خلاف قانونی کارروائی ممکن ہے۔

TOPPOPULARRECENT