Tuesday , October 24 2017
Home / بچوں کا صفحہ / مسلم سائنس داں ابن البیطار

مسلم سائنس داں ابن البیطار

پیارے بچو ! ابو محمد عبداللہ ابن البیطار ماہر نباتات تھے ۔ ان کے والد احمد ضیاء الدین بیطار مویشیوں کے معالج تھے اور اسی نسبت سے البیطار کہلائے اور مشہور ہوئے ۔ البیطار کو مویشیوں کی نسبت پودوں اور جڑی بوٹیوں سے دلچسپی تھی ۔لہذاوہ نے اشبیلیہ کے آس پاس موجود پودوں کو جمع کر کے تحقیق کرنے لگے ۔ اس کے بعد وہ ہسپانیہ ‘ مراکش ‘ الجزائر اورتیونس بھی گئے ۔ دنیا کے بیشتر ممالک کا سفر طے کر کے جڑی بوٹیاں تلاش کر کے ان پر تحقیق کرتے رہے ۔ لیکن انہیں ایک ایسی بوٹی کی تلاش تھی جو  انسانی لاشوں کو سڑنے اور گلنے سے بچاسکے ۔ ابن البیطار کی شہرت سن کر مصر کے حاکم الملک الکامل نے اپنے دربار میں  ایک بڑا عہد پیش کیا لیکن ابن البیطار نے قبول نہ کیا ۔ اسے نباتات کے علم تحقیق سے زیادہ دلچسپی تھی۔ اس نے دنیا کے بیشتر ممالک سے جمع کردہ جڑی بوٹیوں پر تجربے کئے اور ان تجربوں کی روشنی میں کتاب لکھنا شروع کی ۔ یہ کتاب نباتات کے علم میں اہم اضافہ ثابت ہوئی۔ اپنے طویل تجربوں اور تحقیق کے بعد ابن البیطار نے ایک کتاب ’الجامع فی الادویہ المفردہ‘‘ کے نام سے لکھی جو سولھویں صدی عیسوی تک جڑی بوٹیوں کی انسائیکلو پیڈیا تھی ۔ 1348 ء میں یہ عظیم سائنس داں اس دنیا سے رخصت ہوگیا ۔

TOPPOPULARRECENT