Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / مسلم فیملی کا دو لاکھ کروڑ آمدنی کا اعلان

مسلم فیملی کا دو لاکھ کروڑ آمدنی کا اعلان

باندرہ کے اس فیملی کے اعلان کو حکومت  نے خارج کردیا ، جانچ کا حکم
ممبئی ۔ /4 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) باندرہ کی ایک مسلم فیملی کے دو لاکھ کروڑ روپئے آمدنی کے اعلان کو مرکزی حکومت  نے خارج کردیا ہے ۔ وزارت مالیات نے کہا ہے کہ اس معاملے کی باریکی سے جانچ کی جائے گی ۔ وزارت مالیات نے تفتیش کی وجہ بتاتے ہوئے کہا ہے کہ آمدنی کا یہ اعلان مشکوک ہے ۔ کیونکہ اس فیملی کی ذرائع آمدنی محدود ہے ۔ جس کے سبب شک پیدا ہوتا ہے کہ یہ خطیر دولت ان کی ہے یا کسی اور کی ؟ اس مسلم فیملی کے اراکین کے نام عبدالرزاق محمد سید ، بیٹا محمد عارف عبدالرزاق سید ، بیوی رخسانہ عبدالرزاق سید اور بیٹی نور جہاں عبدالرزاق سید ہیں ۔ توجہ طلب بات یہ ہے کہ اس مسلم فیملی کے تین اراکین کے پیان کارڈس اجمیر کے پتہ  پر بنائے گئے ہیں اور یہ تینوں لوگ امسال ستمبر کو ممبئی آئے تھے اور تبھی سے باندرہ میں مقیم ہیں ۔ یہ مسلم فیملی نے یہ اعلان امسال کے بجٹ میں واضح کردہ اسکیم کے تحت کیا ہے جس میں حکومت نے بتایا ہے کہ اگر کوئی شخص اپنی پوشیدہ آمدنی کو ظاہر کرتا ہے تو اسے اعلان کردہ آمدنی کا پینتالیس فیصد ٹیکس ، سرچارج اور جرمانہ دینا ہوگا ۔ اس اسکیم کی آخری تاریخ تیس ستمبر تھی اور اسی کے تحت اس مسلم فیملی نے اس وقت محکمہ انکم ٹیکس کو 65,250 کروڑ روپئے آمدنی بتائی تھی ۔ جبکہ اس وقت انہوں نے دو لاکھ کروڑ روپئے آمدنی بتائی ہے جو پچھلی آمدنی سے تین گنا ہے ۔ وزارت مالیات نے اس مسلم فیملی کے اعلان کو خارج کرتے ہوئے احمد آباد کے تاجر مہیش شاہ کا حوالہ دیا ہے ۔ مہیش شاہ نے گزشتہ ہفتے تیرہ ہزار کروڑ روپئے کالے دھن کا انکشاف کرکے پورے ملک کو حیرت زدہ کردیا تھا ۔ مرکزی سرکار نے مہیش شاہ کے اعلان کو خارج کردیا تھا جس کے بعد سے وہ لاپتہ ہوگئے تھے ۔ پولیس نے انہیں ایک نیوز چینل کے دفتر میں انٹرویو دیتے ہوئے جب گرفتار کیا تو مہیش شاہ نے میڈیا کے سامنے پولیس کو یہ بتایا کہ ان کے پاس جو دولت تھی وہ ان کی نہیں بلکہ لیڈروں ، اعلیٰ سرکاری آفیسرس اور بلڈرس کی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT