Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / مسلم پرسنل لا بورڈ ’ مرد پرسنل لا بورڈ ‘ میں تبدیل

مسلم پرسنل لا بورڈ ’ مرد پرسنل لا بورڈ ‘ میں تبدیل

’ طلاق ثلاثہ ‘ کو ختم کرنا چاہئے ، ایم جے اکبر
کولکتہ ۔ 24 ۔ دسمبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : ’ طلاق ثلاثہ ‘ کے مسئلہ پر آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے منسٹر آف اسٹیٹ امور خارجہ ایم جے اکبر نے الزام عائد کیا کہ یہ تنظیم ’ مرد پرسنل لا بورڈ ‘ میں تبدیل ہوگئی جسے صرف خواتین کے حقوق سلب کرنے میں دلچسپی ہے ۔ انہوں نے یہاں ایک پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اسلام صنفی مساوات کی تعلیم دیتا ہے ۔ صنفی ظلم کی نہیں ۔ اسلام نے کبھی خواتین پر ظلم کی اجازت نہیں دی ۔ مسلم پرسنل لا بورڈ دراصل ’ میل ( مرد ) پرسنل لا بورڈ ‘ میں تبدیل ہوگیا ہے ۔ گزشتہ ماہ کنونشن میں طلاق ثلاثہ کے مسئلہ پر مسلم پرسنل لا بورڈ کے موقف کی کثیر تعداد میں تائید پر انہوں نے کہا کہ ’ عوام کی کثیر تعداد میں شرکت بسا اوقات سچائی کی دلیل نہیں ہوتی ‘ ۔ ایم جے اکبر نے ’ طلاق ثلاثہ ‘ کو انسانیت کے خلاف قرار دیتے ہوئے اسے ختم کرنے پر زور دیا ۔ انہوں نے کہا کہ بسا اوقات شادی شدہ زندگی کامیاب نہیں ہوتی اس لیے طلاق کی گنجائش رکھی گئی ہے ۔ لیکن مسلم طبقہ میں شادی کے وقت عورت سے اجازت ضروری ہوتی ہے پھر طلاق کے معاملہ میں صرف یہ اختیار مرد کو کیوں حاصل ہے ۔ جہاں وہ اپنی مرضی کے مطابق تین مرتبہ لفظ ’ طلاق ‘ کہہ دے تو یہ واقع ہوجاتی ہے ۔ ایم جے اکبر نے کہا کہ اگر ملک کو ترقی کرنا ہے اور معیشت کو فروغ دینا ہو تو خواتین کو بھی ساتھ لے کر چلنا ہوگا ۔ اگر خواتین کو پیچھے چھوڑ دیا جائے تو ہندوستان اور اس کی معیشت کبھی ترقی نہیں کرسکتی ۔ خواتین ہماری آبادی کا 50 فیصد ہیں اور ہمیں انہیں ساتھ لے کر چلنا ہوگا ۔۔

TOPPOPULARRECENT