Saturday , October 21 2017
Home / ہندوستان / مسلم پرسنل لا بورڈ کے بیانات پر صبروتحمل کی درخواست کی سماعت سے سپریم کورٹ کا انکار

مسلم پرسنل لا بورڈ کے بیانات پر صبروتحمل کی درخواست کی سماعت سے سپریم کورٹ کا انکار

نئی دہلی ۔ 7 جون (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے آج ایک درخواست کی عاجلانہ سماعت سے انکار کردیا جس میں درخواست کی گئی تھی کہ کل ہند مسلم پرسنل لاء بورڈ کے گمراہ کن پیغامات پر عوام سے صبروتحمل اختیار کرنے کی ہدایت دی جائے۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ مسلم خواتین کے بھی حقوق ہیں اور شادی اور طلاق کے مسائل سے متعلق وہ بھی عدالت سے رجوع ہوسکتے ہیں۔ غیرذمہ دارانہ بیانات پر کسی کا بھی مشتعل ہونا فطری ہے۔ سپریم کورٹ کی تعطیلات کی بنچ کے جسٹس پی سی گھوش اور امیتاو رائے نے فوری سماعت کرنے سے انکار کرتے ہوئے درخواست گذار ایڈوکیٹ فرح فیض سے جو ازخود درخواست کی ایک فریق بھی ہیں، کہا کہ سپریم کورٹ میں ایک درخواست معمول کے مطابق سماعت کی جائے گی۔ رٹ درخواستوں اور تازہ درخواست کی سماعت ایک ساتھ ہوگی۔ ایڈوکیٹ فرح فیض نے کہا تھا کہ ہدایت جاری کی جائے کہ ذرائع ابلاغ اس مقدمہ کی رپورٹنگ کرتے وقت صبروتحمل سے کام لیں۔ عدالت نے کہا کہ تمام حساس مسائل پر ایسا ہی کیا جارہا ہے جبکہ مسلم خواتین کے حقوق کے بارے میں کل ہند مسلم پرسنل لاء بورڈ کے ارکان گمراہ کن بیانات جاری کررہے ہیں۔ ہم ذرائع ابلاغ کو مقدمہ روکنے کیلئے کیسے کہہ سکتے ہیں۔ کیا ایسا کوئی نظام دنیا بھر میں کہیں بھی موجود ہے جس کے تحت ذرائع ابلاغ نے عدالتی کارروائی روک دی ہو۔

TOPPOPULARRECENT