Saturday , September 23 2017
Home / پاکستان / مسلکی تشدد کے انسداد کیلئے پاکستان میں 10 ہزار فوجی تعینات

مسلکی تشدد کے انسداد کیلئے پاکستان میں 10 ہزار فوجی تعینات

اسلام آباد ۔ 14 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان ملک گیر سطح پر مسلکی تشدد کے ماہ محرم کے دوران انسداد کیلئے 10 ہزار فوجی اور 6 ہزار نیم فوجی ارکان عملہ تعینات کررہا ہے۔ وزیرداخلہ پاکستان نے کہا کہ سنیوں اور شیعوں کے درمیان جھڑپوں سے دو سال قبل 11 افراد ہلاک ہوئے تھے۔ یہ واقعہ اسلام آباد سے قریب شہر راولپنڈی میں پیش آیا تھا۔ وزیرداخلہ چودھری نثار حسین نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کٹر سنیوں اور شیعوں کے درمیان مسلکی تشدد کے قوی امکانات ہیں۔ اس لئے پولیس کو فسادیوں کو دیکھتے ہی گولی مارنے کے احکام دے دیئے گئے ہیں۔ ملک اسحاق اور ان کی تنظیم لشکرجھانگوی کے عسکریت پسند اور سینئر کمانڈر کو پاکستانی پنجاب میں گولی مار کر ہلاک کیا جاچکا ہے۔ بدترین تشدد بلوچستان میں دیکھا گیا جہاں دو لاکھ شیعہ آبادی ہے۔ محرم کے دوران شیعوں کے اجتماعات اور جلو س عام ہیں۔ حضرت حسین ؓ سنیوں اور شیعوں دونوں کیلئے مساوی محترم شخصیت ہیں لیکن ان کی شہادت پر برسرعام ماتم کے کٹر سنی مخالف ہیں۔

TOPPOPULARRECENT