Thursday , July 27 2017
Home / Top Stories / مشہور شاعر ’’بیکل اتساہی‘‘کاانتقال

مشہور شاعر ’’بیکل اتساہی‘‘کاانتقال

نئی دہلی،3دسمبر(سیاست ڈاٹ کام) راجیہ سبھا کے سابق رکن پارلیمنٹ اور مشہور شاعر محمد شفیع خان بیکل اتساہی کا آج یہاں رام منوہر لوہیا اسپتال میں انتقال ہوگیا۔وہ 87سال کے تھے ۔ بیکل اتساہی کے اہل خانہ میں دو بیٹے اور چار بیٹیاں ہیں۔برین ہیمبرج کی وجہ سے جمعرات کو انہیں اسپتال میں داخل کرایا گیا۔انہیں انتہائی نگہداشت والی یونٹ (آئی سی یو) میں رکھا گیا تھا، جہاں آج علی الصبح چار بج کر 30منٹ پر ان کا انتقال ہوگیا۔انہیں کل دوپہر ظہر کی نماز کے بعد ان کے آبائی مقام اترپردیش کے بلرام پور میں تدفین عمل میں آئے گی ۔ان کی پیدائش 1928میں بلرام پور میں ہوئی تھی۔بیکل اتساہی نے اردو اور ہندی زبان کو پورا احترام بخشا۔مقامی زبانوں کے امتزاج سے انہوں نے غزل اور شعروشاعری میں کئی تجربے کئے جو سامعین نے خوب پسند کئے ۔گنگا جمنی تہذیب کے حامی بیکل اتساہی کو ادبی خدمات میں خصوصی خدمات انجام دینے کے لئے 1976میں پدم شری ایوارڈسے نوازا گیا تھا۔اترپردیش حکومت نے انہیں یش بھارتی ایوارڈ سے نوازا تھا۔کانگریس نے بیکل اتساہی کو 1986میں راجیہ سبھا کا رکن بنایا تھا۔ بیکل اتساہی کی حیدرآباد اور ادارہ سیاست سے کئی دہائیوں قدیم وابستگی رہی ۔ ماضی میں وہ روزنامہ سیاست کے زیراہتمام مختلف مشاعروں اور بالخصوص شنکرجی مشاعرے میں مدعو کئے جاتے تھے جہاں انہیں شایقین کی بے پناہ داد حاصل ہوا کرتی تھی ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT