Monday , October 23 2017
Home / Top Stories / مصباح القراء مولانا عبداللہ قریشی الازہری کا انتقال

مصباح القراء مولانا عبداللہ قریشی الازہری کا انتقال

تاریخی مکہ مسجد کا ایک باب ختم ، دینی و علمی حلقوں میں غم و اندوہ کی لہر ، آج نماز جنازہ و تدفین

حیدرآباد۔ 8 ڈسمبر (سیاست نیوز) مصباح القراء حضرت علامہ مولانا عبداللہ قریشی الازہری الملتانی چشتی افتخاری خطیب و امام مکہ مسجد و نائب شیخ الجامعہ جامعہ نظامیہ  نے آج مختصر علالت کے بعد بعمر 81 سال  خالق حقیقی سے جاملے۔ مولانا کے انتقال کی اطلاع کے ساتھ ہی علمی حلقوں میں غم و اندوہ کی لہر دوڑ گئی۔ مولانا کی نماز جنازہ بروز چہارشنبہ بعد نماز ظہر تاریخی مکہ مسجد میں ادا کی جائے گی اور تدفین احاطہ درگاہ حضرت عبداللہ شاہ نقشبندی ؒ ، نقشبندی چمن واقع مصری گنج میں عمل میں آئے گی۔ حضرت عبداللہ قریشی الازہری کے انتقال کے ساتھ تاریخی مکہ مسجد کا ایک باب بھی ختم ہوگیا۔ خطیب صاحب گزشتہ 27 برس سے مکہ مسجد میں خطابات و امامت کے فرائض انجام دے رہے تھے۔ مولانا عبداللہ قریشی الازہری کو حضرت ابوالفضل سید شاہ اسمعیل حسینی الملتانی قادریؒ سے بیعت حاصل تھی۔ علاوہ ازیں حضرت نوراللہ حسینی افتخاریؒ سے سلسلہ چشتیہ و افتخاریہ میں بیعت حاصل تھی۔ قیام مصر کے دوران حضرت نے الشیخ ابراہیم عوض مصریؒ سے بھی بیعت حاصل کی تھی۔ حضرت کو سلسلہ ملتانی کے علاوہ حضرت ابراہیم عوض مصریؒ سے خلافت حاصل تھی۔ عبداللہ قریشی الازہری 1987ء سے بپابندی مکہ مسجد میں منصب خطابت و امامت پر اپنی ذمہ داریاں نبھا رہے تھے۔ سال گزشتہ تک بھی وہ اپنی ذمہ داریاں نبھاتے رہے جبکہ سال گزشتہ ناسازی صحت کی بناء پر انہوں نے رضاکارانہ سبکدوشی کا اعلان کیا تھا۔ عبداللہ قریشی صاحب کے انتقال کی اطلاع کے ساتھ ہی ارباب جامعہ ، ارباب حکومت کے علاوہ سیاسی قائدین، عہدیداروں اور معتقدین کا تانتا بندھ گیا۔ حضرت مولانا مفتی عظیم الدین صدر مفتی جامعہ نظامیہ، حضرت مولانا مفتی خلیل احمد شیخ الجامعہ جامعہ نظامیہ، حضرت مولانا خواجہ شریف شیخ الحدیث جامعہ نظامیہ، ڈاکٹر سیف اللہ شیخ الادب جامعہ نظامیہ ، مولانا مفتی ضیاء الدین نقشبندی ، مولانا سید سعادت پیر بغدادی ، مولانا عرفان اللہ شاہ نوری ، مولانا بدیع الدین صابری ، مولانا سید شاہ قبول پاشاہ قادری شطاری، مولانا حافظ عثمان نقشبندی امام مکہ مسجد ، مولانا مفتی صادق محی الدین فہیم کے علاوہ دیگر اساتذہ نے مرحوم کے مکان واقع پنچ محلہ پہنچ کر مولانا حافظ رضوان قریشی خطیب و امام مکہ مسجد کے علاوہ دیگر ارکان خاندان کو پرسہ دیا۔ مولانا کے انتقال کی اطلاع عام ہونے کے ساتھ ہی حرمین و شریفین میں مغفرت و درجات میں بلندی کیلئے دعائیں کی گئیں۔ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ جناب محمد محمود علی، وزیر آئی ٹی و پنچایت راج کے ٹی راما راؤ ، قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل جناب محمد علی شبیر، رکن قانون ساز کونسل جناب فاروق حسین، جناب اے کے خاں ڈائریکٹر جنرل تلنگانہ اینٹی کرپشن بیورو، مسٹر ہنمنت راؤ رکن راجیہ سبھا، مسٹر ایم ششی دھر ریڈی، مسٹر ڈی ناگیندر اور مجلسی قائدین ، ارکان اسمبلی و قانون ساز کونسل اور دیگر نے مکان پہنچ کر آخری دیدار کیا۔ حضرت عبداللہ قریشی الازہری کے سانحہ ارتحال کی اطلاع پر تلنگانہ کے چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے مولانا مرحوم کی خدمات کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے افرادِ خاندان سے اظہار ہمدردی کی۔ صدر تلنگانہ تلگو دیشم پارٹی مسٹر ایل رمنا نے مولانا عبداللہ قریشی الازہری کے سانحہ ارتحال پر گہرے رنج کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی خدمات کو خراج عقیدت پیش کیا۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن این اتم کمار ریڈی نے اپنے تعزیتی پیام میں مرحوم کی قرأت کا تذکرہ کرتے ہوئے مرحوم منفرد انداز میں قرأت کیلئے معروف تھے۔ حضرت عبداللہ قریشی الازہری جامعہ ازہر (مصر) سے واپسی کے بعد جامعہ نظامیہ میں مختلف عہدوں پر فائز رہے۔ علاوہ ازیں وہ لطیفیہ عربک کالج کے پرنسپل کے عہدہ پر بھی زائد از 10 سال خدمات انجام دے چکے ہیں۔ مصباح القراء حضرت عبداللہ قریشی الازہری نے مکہ مسجد میں واقع مدرسہ حفاظ شاہی سے حفظ قرآن و قرأت کلام پاک کی تعلیم مکمل کی تھی اور سلطنت ِ آصفیہ کے آخری حکمراں نواب میر عثمان علی خاں نے انہیں عطائے خلعت و دستار بندی تکمیل حفظ پر انجام دی تھی۔ مولانا عبداللہ قریشی الازہری عالمی شہرت یافتہ قراء کی فہرست میں نمایاں مقام رکھتے تھے۔ مولانا کی قرأت کلام پاک سے متاثر ہوتے ہوئے نواب میر برکت علی خاں مکرم جاہ بہادر نے قرأت کلام پاک کی تعلیم و تربیت کیلئے دارالتجوید القرأت کے آغاز کی خواہش کا اظہار کیا جس پر مولانا نے 1974ء میں پرانی حویلی سے اس مدرسہ کی شروعات کی جوکہ عرصہ دراز تک چومحلہ پیالیس میں بھی خدمات انجام دیتا رہا اور فی الحال مغل پورہ میں موجود خواجہ کا چھلہ میں چلایا جارہا ہے۔ پسماندگان میں اہلیہ کے علاوہ مولانا کے بھائی حضرت مولانا عبدالعلیم قریشی خطیب و امام جامع مسجد چوک اور ایک ہمشیرہ شامل ہیں۔

TOPPOPULARRECENT