Friday , August 18 2017
Home / عرب دنیا / مصر کے وزیر اعظم کابینہ سمیت مستعفی

مصر کے وزیر اعظم کابینہ سمیت مستعفی

قاہرہ ۔ 12 سپٹمبر۔(سیاست ڈاٹ کام) مصر کے وزیراعظم ابراہیم محلب اور ان کی کابینہ نے آج استعفیٰ دے دیا ہے۔ صدارتی بیان میں یہ بات بتائی گئی ۔ حکومت نے یہ استعفیٰ ایسے وقت دیا جبکہ وزیر زراعت کو کرپشن کے الزامات پر گرفتار کیا گیا تھا ۔ صدر عبدالفتاح السیسی نے ان کے استعفے منظور کر لئے ہیں اور وزیر پٹرولیم شریف اسماعیل کو وزیراعظم نامزد کرکے نئی حکومت بنانے کی دعوت دی ہے۔ مصری ایوان صدر کی جانب سے ہفتے کے روز جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ صدر نے وزیراعظم ابراہیم محلب کی جانب سے پیش کردہ حکومت کے استعفے کو منظور کر لیا ہے۔ کابینہ کے مستعفی ہونے کی کوئی وجہ بیان نہیں کی گئی ہے۔ صدر السیسی نے مستعفی کابینہ کو نئی حکومت کی تشکیل تک کام کرنے کی ہدایت دی ہے۔انھوں نے وزیر تیل شریف اسماعیل کو نئی کابینہ بنانے کی دعوت دی ہے۔مصری کابینہ کے مستعفی ہونے کے اعلان سے صرف ایک ہفتے قبل حکام نے وزیرزراعت کو بدعنوانیوں کے الزام میں گرفتار کر لیا تھا۔ صدر عبدالفتاح السیسی نے گذشتہ سال ابراہیم محلب کو وزیراعظم مقرر کیا تھا۔ اس سے پہلے وہ مکانات اور تعمیرات کے وزیر رہے تھے۔ وہ خطے کی بڑی تعمیراتی کمپنیوں میں سے ایک ’’عرب کنٹریکٹرز‘‘کے چئیرمین بھی رہ چکے ہیں۔ واضح رہے کہ مصر میں آیندہ ماہ نئے پارلیمانی انتخابات ہونے والے ہیں۔آج حکومت نے استعفیٰ ایسے وقت دیاجبکہ مصر میں طویل عرصہ سے تاخیر کا شکار انتخابات 17 اکٹوبر سے لے کر 2 ڈسمبر تک مختلف مراحل میں منعقد کرنے کا فیصلہ کیاگیا ہے ۔ یہ انتخابات پہلے 2014 کے اوائل میں منعقد ہونے والے تھے لیکن قانونی بنیادوں اور مختلف حقوق انسانی گروپس کی جانب سے حکومت کے سخت اقدامات کے سلسلے میں عائد کئے جانے والے الزامات کی بناء ملتوی کردیئے گئے تھے ۔ ان تنظیموں اور اداروں نے اسلام پسند اپوزیشن کے خلاف کارروائی کے دوران حکومت کے اختیار کردہ اقدامات پر تنقیدیں کی تھیں۔ وزیراعظم کے دفتر نے پیر کو یہ اعلان کیا تھا کہ وزیر زراعت صالح ہلال کو گرفتار کیا جارہا ہے ۔ اس سے پہلے صدر عبدالفتح السیسی نے کرپشن کے الزامات پر تحقیقات کے سلسلے میں انھیں مستعفی ہونے کی ہدایت دی تھی ۔ محلب ابراہیم کی 31 رکنی کابینہ نے مارچ 2014 ء میں حلف لیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT