Wednesday , October 18 2017
Home / Top Stories / مطاف کے حصے پر چھتریاں نصب کرنے کی تجویز

مطاف کے حصے پر چھتریاں نصب کرنے کی تجویز

مسجد نبویؐ کے احاطہ میں نصب سائبان کی طرز پر معتمرین کو دھوپ سے بچانے انتظامات
جدہ ۔ /7 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) حرم شریف میں کعبۃ اللہ کا طواف کرنے والے معتمرین کو دھوپ کی طمازت سے محفوظ رکھنے کیلئے چھتریاں نصب کرنے کی تجویز پیش کی گئی ہے ۔ احاطہ مسجد نبویؐ میں نصب عصری چھتریوں کی طرز پر حرم شریف میں مطاف کے علاقے کو بھی چھتریوں کا سائبان بنایا جائے گا ۔ معتمرین کو شدید گرما کے دوران دھوپ سے راحت پہونچانے کی نیت سے چھتریاں نصب کرنے کا منصوبہ بنایا گیا ہے ۔ اس سلسلے میں مطاف کے علاقے کا جائزہ لیکر رپورٹ تیار کی گئی ہے ۔ سعودی عرب کے اخبارات کے مطابق اس تجویز پر اس وقت غور و خوص کیا گیا جب حرمین شریفین امور کے سربراہ شیخ عبدالرحمن السدیس نے وزارت فینانس کے نمائندوں سے ملاقات کی ۔ اس موقع پر حرم شریف پراجکٹ کمیٹی کے ارکان بھی موجود تھے ۔ حضور اکرم ﷺ کے روضہ مبارک کے متصل مسجد نبویؐ کے صحن میں نصب کردہ گلدستہ کی شکل والی چھتریاں معتمرین اور زائرین کی توجہ کا مرکز ہوتی ہیں ۔ یہ چھتریاں خودکار آلات سے کھولی اور بند کی جاتی ہیں ۔

 

ان چھتریوں کی کشادگی اور بند ہونے کے منظر کو معتمرین اشتیاق سے دیکھتے ہیں ۔ مسجد نبویؐ کے وسیع و عریض صحن کی خوبصورتی اور خوشنمائی ان چھتریوں سے دوبالا ہوجاتی ہے ۔ معتمرین کو دھوپ اور گرمی سے محفوظ رکھنے کیلئے موثر اقدامات کئے گئے ہیں ۔ مسجد نبویؐ کے انتظامات کی طرح کعبۃ اللہ کے اطراف طواف کرنے والے معتمرین کو سائبان فراہم کیا جائے گا ۔ خاص کر گرما کے موسم میں عازمین حج طواف کے دوران شدید گرمی اور دھوپ کی شدت کا سامنا کرتے ہیں ۔ اس پراجکٹ میں حرم شریف کی لائبریری کی تعمیر ، خودکار سڑھیوں کیلئے علحدہ گیٹ وے کی تعمیر ، صفا و مروہ کی توسیع کیلئے الیکٹرو میکانیکل سسٹم بنانے کے علاوہ کنگ فہد توسیعی پراجکٹ کی چھت اور صفا و مروہ کی اوپری چھت کو واٹر پروف سے تعمیر کرنے کے بشمول مختلف امور پر غور و خوص کیا گیا ۔ جمعہ کے عربی خطبہ اور تقاریر کو بھی دنیا کی اہم زبانوں میں ترجمہ کرکے بروقت معتمرین کی سماعت کیلئے پیش کئے جانے کا منصوبہ ہے ۔ قبل ازیں حرم شریف کے توسیع پراجکٹ کے تحت مطاف کے علاقے میں تین منزلہ فلائی اوور تعمیر کیا گیا تھا تاکہ معتمرین کو طواف کی سہولت ہوسکے لیکن اب اس تین منزلہ فلائی اوور کو منہدم کرکے مطاف کی سابق حصے کو بحال کرنے پر غور کیا جارہا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT