Tuesday , October 17 2017
Home / دنیا / مطیع الرحمن نظامی کی پھانسی کیخلاف بنگلہ دیش میں عام ہڑتال

مطیع الرحمن نظامی کی پھانسی کیخلاف بنگلہ دیش میں عام ہڑتال

ڈھاکہ ۔ 11 مئی (سیاست ڈاٹ کام) جماعت اسلامی کے سربراہ مطیع الرحمن نظامی کو پھانسی دیئے جانے کے خلاف کل ملک گیر پیمانے پر ہڑتال کا اعلان کیا ہے۔ 1971ء میں بنگلہ دیش کی جنگ آزادی کے دوران نظامی کو جنگی جرائم کا مرتکب قرار دیتے ہوئے کل تختۂ دار پر لٹکا دیا گیا تھا۔ جماعت اسلامی نے اس سلسلے میں ایک بیان جاری کرتے ہوئے اسے ’’منصوبہ بند قتل‘‘ سے تعبیر کیا۔ جماعت اسلامی ، پاکستان سے آزادی کی تائید نہیں کرتی تھی۔ 24 گھنٹوں کی ہڑتال کل صبح 5 بجے شروع ہوگی اور جمعہ کو صبح 5 بجے اختتام پذیر ہوگی۔ دریں اثناء جماعت اسلامی کے عبوری سربراہ مقبول احمد نے کہا کہ نظامی کو انصاف سے محروم کردیا گیا اور وہ سیاسی انتقام کی بھینٹ چڑھ گئے ، لہٰذا اب اس کی شدید مخالفت کرتے ہوئے 24 گھنٹوں کی ہڑتال کو کامیابی سے ہمکنار کیا جائے۔ قبل ازیں جماعت اسلامی نے 6 مئی کو ہڑتال کا اعلان کیا تھا جو دراصل سپریم کورٹ کی جانب سے سزائے موت کے فیصلہ پر نظرثانی کے لئے حاصل کردہ نظامی کی درخواست کو مسترد کرنے کے بعد منائی گئی تھی۔ نظامی کو نصف شب ڈھاکہ سنٹرل جیل میں تختہ دار پر لٹکا دیا گیا۔ وزیر داخلہ اسدالزماں نے کہا کہ نظامی نے صدر موصوف سے رحم کی درخواست کرنے کو ترجیح نہیں دی تھی کیونکہ وہ خود بھی جانتے تھے کہ جن جرائم کا ارتکاب انہوں نے کیا ہے، وہ کسی بھی حالت میں ناقابل معافی ہیں اور انہیں بخشا نہیں جائے گا۔ ان کے آبائی موضوع میں آج صبح ان کی تدفین عمل میں آئی جہاں ارکان خاندان کے علاوہ پڑوسیوں اور خیر خواہوں اور دوستوں کی کثیر تعداد بھی موجود تھی۔

TOPPOPULARRECENT