Monday , August 21 2017
Home / ہندوستان / معاشی اصلاحات وسیع البنیاد ہونا چاہئے: وزیراعظم

معاشی اصلاحات وسیع البنیاد ہونا چاہئے: وزیراعظم

نئی دہلی۔6 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ معاشی اصلاحات میں ہر ایک کو شامل کیا جانا چاہئے اور انہیں وسیع البنیاد ہونا چاہئے۔ ان کا مقصد عوام کے معیار زندگی میں بہتری ہونا چاہئے۔ شہ سرخیوں میں رہنے پر توجہ مرکوز نہیں کی جانی چاہئے۔ چھٹویں دہلی معاشی چوٹی کانفرنس میں ماہرین معاشیات کے ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے مودی نے کہا تھا کہ حکومت کالا دھن جو بیرون ملک جمع ہے، اور جس کی مالیت 10500 کروڑ روپئے ہے، پتہ چلاکر ہندوستان واپس لائے گی۔ مودی نے کہا کہ ہندوستان اپنی بہترین کوششیں کررہا ہے۔ 17 ماہ قبل جب سے ان کی حکومت برسر اقتدار آئی ہے، جی ڈی پی ترقی میں اضافہ ہوگیا ہے، افراط زر میں کمی آئی ہے۔ بیرونی سرمایہ کاری میں اضافہ ہوگیا ہے اور سی اے ڈی انحطاط پذیر ہوا۔ مالیہ بہتر ہوگیا اور شرح سود کم کردی گئی ۔ مالی خسارہ کم ہوگیا اور روپئے کی قدر مستحکم ہوگئی۔ یقینا ایسا اتفاقی طور پر نہیں ہوا، یہ کامیابی اچھی طرح سونچی سمجھی پالیسیوں کے تسلسل کا نتیجہ ہے۔ انہوں نے یاد دلایا کہ مختلف اقدامات معاشی محاذ پر کئے گئے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ حکومت کوشش کررہی ہے کہ سب کو ساتھ لے کر اور وسیع البنیاد اصلاحات کئے جائیں۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ یہ ایک طویل دور ہے کوئی چھوٹی موٹی دور نہیں ۔ انہوں نے تمام لوگوں سے اپیل کی کہ وہ روایتی علاج کے طریقوں سے بالاتر ہوکر سوچیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں صرف چند معیاری راجحانات کے بارے میں اصلاحیت نظریات پر غور نہیں کرنا چاہئے۔ ہمارا نظریہ یا اصلاح سب کو ساتھ لینے والی یا وسیع البنیاد ہونی چاہئے۔ اصلاح کا مقصد صرف کاغذ پر سرخیاں نہیں ہیں۔ بلکہ ہمارے عوام کی بہتر زندگی ہے۔ نریندر مودی نے چوٹی کانفرنس کا افتتاح کرتے ہوئے جس میں ہندوستان اور بیرونی ممالک کے ماہرین معاشیات شرکت کررہے ہیں کہاکہ کرپشن پر قابو پانے کے اقدامات کے بارے میں محکمہ انکم ٹیکس ایک نظام آن لائین جانچ کا متعارف کروائے گا جس میں ریٹرنس کی جانچ کی جائے گی اور کارکردگی کی تفصیلات کے پروفارما دیکھے جائیں گے تاکہ درست احکام جاری کرنے میں سہولت ہوسکے۔

TOPPOPULARRECENT