Friday , July 28 2017
Home / شہر کی خبریں / معراج النبیؐ مقدس شب، عبادتوں اور ریاضتوں میں گزارنے کی ضرورت

معراج النبیؐ مقدس شب، عبادتوں اور ریاضتوں میں گزارنے کی ضرورت

منچلے نوجوانوں کی کرتب بازی سے رسوائی، اغیار سے تنقید، مقدس رات کو بے حرمتی سے بچایاجائے
حیدرآباد۔23اپریل (سیاست نیوز) معراج النبی ﷺ مقدس رات ہے اور اس رات کو عبادتوں اور ریاضتوں میں گذارنی چاہئے ۔ اللہ رب العزت نے اپنے پیارے حبیب احمد مجتبی محمد مصطفی ﷺکے ذریعہ آپؐ کی امت کو شب معراج کے موقع پر جو انعام و اکرام سے نوازا ہے اس کے لئے اللہ کا شکر ادا کرنے کے ساتھ ساتھ اپنے اعمال پر استغفار کرنے کی رات ہے اس رات کو سڑکوں یا ہوٹلوں میں گذارنے کے بجائے مساجد میں عبادتوں کا اہتمام کرتے ہوئے گذارنے کی ضرورت ہے ۔ مقدس راتوں کے دوران اکثر یہ دیکھا جا رہا ہے کہ نوجوان سڑکو ںپر کرتب بازی کرتے نظر آرہے ہیں اور ان مقدس راتوں کے دوران شہر کی ہوٹلوں میں خصوصی پکوان کے انتظامات کئے جانے لگے ہیں جس کے سبب شہر کی ہوٹلیں آباد ہونے لگی ہیں ۔ شب معراج ‘ شب برأت اور شب قدر کی افضل و مقدس راتوں کو محکمہ پولیس کی جانب سے پٹرول پمپ خصوصی طور پر بند کروائے جانے لگے ہیں جس سے اس بات کا اندازہ ہوتا ہے کہ ان مقدس راتوں میں کتنے نوجوان ایسے ہیں جو رات کے اوقات میں سڑکوں پر گھومنے کیلئے نکلتے ہیں۔ ملک کے موجودہ ماحول میں نوجوانوں اور امت مسلمہ پر یہ ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اپنے اخلاق و کردار کے ذریعہ اپنے دین کی اشاعت و ترویج کو ممکن بنائیں۔ مولانا سلمان حسنی ندوی نے چند ماہ قبل شہر حیدرآباد میں منعقدہ ایک اجلاس عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ موجودہ حالات میں ہندستانی مسلمانوں کو نبی اکرمﷺ کی مکی زندگی سے تحریک حاصل کرتے ہوئے اس پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے کیونکہ ہندستان میں مسلمانوں کی موجودہ حالت مکی زندگی کے حالات کی طرح ہے اسی لئے امت مسلمہ کو بھی اپنے اخلاق و کردار کو پیش کریں ۔ گذشتہ چند برسوں کے دوران مقدس راتوں کے دوران دیکھی جانے والی نوجوانوں کی حرکات پر ہر گوشہ سے تنقیدیں کی جا نے لگی ہیں اور کہا جانے لگا ہے کہ مقد س راتوں کے دوران امت کے نوجوانوں کا طرز عمل اغیار کے سامنے رسوائی کا باعث بننے لگا ہے۔ مولانا حافظ پیر شبیر احمد نے اپنے پیغام معراج النبی ؐ میں امت مسلمہ کو نمازوں کی پابندی کی تلقین کرتے ہوئے کہا کہ امت کا بڑا طبقہ نماز سے غفلت برتنے لگا ہے جبکہ اللہ کے رسول ﷺ نے فرمایا کہ نماز مومن کی معراج ہے اور نماز پیارے حبیب ﷺ کے آنکھوں کی ٹھنڈک ہے لیکن اس کے باوجود اس اہم ترین فریضہ سے غفلت برتی جا رہی ہے جو کہ افسوسنا ک ہے۔ انہوں نے امت مسلمہ کے نوجوانوں سے اپیل کی کہ وہ اس شب معراج کے موقع پر احکم الحکمین کے حضور گڑگڑا کر اپنے گناہوں کی معافی طلب کریں اور اس بات کا عہد کریں کہ آئندہ زندگی میں نمازوں کی پابندی کو یقینی بنائیں گے۔امت کے ہر فرد کو چاہئے کہ وہ کثرت استغفار کے ذریعہ اللہ کو راضی کروائے اور آئندہ زندگی شریعت کے مطابق گذارنے کا عہد کرے۔مولانا احسن بن محمد عبدالرحمن الحمومی نے کہاکہ شب معراج کے موقع پر نوجوانو ںکو ان برائیوں سے روکنا والدین کی ذمہ داری ہے اور والدین کو چاہئے کہ اس مسئلہ کے حل کے لئے وہ خود اپنے بچوں کو اپنے ساتھ مساجد لے جائیں اور نمازوں و خصوصی عبادات کا احترام کروائیں۔ انہوں نے بتایاکہ نوجوانوں کی یہ حرکات بد ترین گناہ ہے کیونکہ ان کی یہ حرکات مقدس شب کی بے حرمتی کا سبب بنتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT