Saturday , September 23 2017
Home / Top Stories / مغربی بنگال میں تیسرے مرحلے کی رائے دہی

مغربی بنگال میں تیسرے مرحلے کی رائے دہی

ایک لاکھ صیانتی ارکان عملہ تعینات ، مرکزی اور ریاستی پولیس کی خدمات حاصل
کولکاتہ ۔ 20 اپریل ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) تیسرے مرحلہ کی مغربی بنگال میں اہم رائے دہی کے دوران سخت حفاظتی انتظامات کئے گئے ہیں۔ ایک لاکھ صیانتی عملہ کو بشمول 75,000 مرکزی نیم فوجی ارکان عملہ کو ریاست گیر سطح پر تعینات کیا گیا ہے ۔ الیکشن کمیشن کے عہدیداروں نے کہاکہ تقریباً سی آر پی ایف کی 700 کمپنیاں جو 75,000 افراد پر مشتمل ہیں مورچہ سنبھال چکی ہیں۔ ہدایات کے مطابق وہ روٹ مارچ کررہی ہیں تاکہ ایسے علاقوں میں جہاں رائے دہندوں کا اعتماد متزلزل ہے اسے بحال کیا جاسکے ۔ 75,000 نیم فوجی ارکان عملہ کی مدد کی جارہی ہے کیونکہ وہ لوگ مقامی زبان یا جغرافیہ سے واقف نہیں ہے۔ 25,000 ریاستی پولیس کا عملہ تعینات کیا جائے گا ۔ تمام رائے دہی کے مراکز کی مرکزی فورسیس حفاظت کریں گی جبکہ لاٹھی بردار ریاستی ارکان عملہ جو مقامی زبان سمجھتے ہیں قطار کو قابو میں رکھیں گے اور قطار بنانے میں مدد کریں گے ۔ عہدیداروں کے بموجب ریاستی پولیس کو مرکز رائے دہی میں صرف انتہائی صورتحال میں داخل ہونے کی اجازت ہوگی جبکہ پریسائیڈنگ آفیسر اس کی خواہش کرے۔

عہدیداروں نے کہاکہ صیانتی افواج کی زیادہ تعداد میں دستیابی ممکن بنائی جاچکی ہے ۔ آسام میں سپاہیوں کی تعیناتی انتخابات کے اختتام پر مغربی بنگال منتقل کی گئی ہے ۔ نیم فوجی ارکان عملہ کی زیادہ تعداد نظر آنے کے مقصد سے کئی گاڑیاں جن پر واضح طورپر مرکزی فورسیس تحریر ہے استعمال کی جارہی ہیں۔ اس کے علاوہ ان گاڑیوں پر ایک ہوٹر یا سائرن نصب کیا گیا ہے ۔ صیانتی عملہ کا ایک بیرونی حلقہ قائم کیا گیا ہے جس میں اعلیٰ سطحی تیز رفتار ردعمل ٹیمیں ، فلائنگ اسکواڈس ، شعبہ جاتی فورسیس ، متحرک بلند سطحی ریڈیو فلائنگ اسکواڈس وغیرہ شامل ہیں۔ تیسرے مرحلے کی رائے دہی 62 نشستوں کیلئے ہوگی جو مرشدآباد ، ندیا ، بردوان اضلاع اور شمالی کولکاتہ میں پھیلے ہوئے ہیں۔ یہ رائے دہی کل ہے ۔ بحالی اعتماد اقدامات کے طورپر 3,401 ہیلمٹ پہنے ہوئے سپاہیوں کو بھی تعینات کیا جارہا ہے ۔ علاقائی فورس کی 1200 ٹیمیں متحرک ردعمل ٹیموں میں تبدیل کردی گئیں ہیں جن کی تعداد 194 ہے ۔

TOPPOPULARRECENT