Thursday , September 21 2017
Home / Top Stories / مغربی بنگال میں سیلاب کی صورتحال مزید سنگین

مغربی بنگال میں سیلاب کی صورتحال مزید سنگین

کولکتہ ۔ 3 ۔ اگست : ( سیاست ڈاٹ کام ) : جنوبی بنگال کے اضلاع میں آج بھی مختلف بیرجس ( باندھ ) سے پانی کے اخراج کے بعد سیلاب کی صورتحال سنگین رہی۔ ہلاکتوں کی تعداد69 ہوگئی۔ جس کے باعث متاثرہ 12 اضلاع کے 37 لاکھ افراد کو مشکلات سے دوچار ہونا پڑا ۔ چیف منسٹر ممتا بنرجی جو کہ سیلاب کی صورتحال پر نگرانی کے لیے کل رات بھر سکریٹریٹ میں موجود تھیں ۔ ضلع شمال24 پرگنہ کے علاقہ ہابرا اور اشوک نگر میں راحت اور امداد کے کاموں کا جائزہ لینے کے لیے دورہ کرے گی ۔ ریاستی وزیر آبپاشی مسٹر راجیب بنرجی نے بتایا کہ ریاست بھر میں گذشتہ شب مختلف بیرجس سے پانی کے اخراج کے بعد صورتحال بدستور تشویشناک ہے ۔ جب کہ دریاؤں میں طغیانی کے باعث حالات تو مزید ابتر ہوگئے ہیں اور کل نصف شب سے اب تک 9,0000 کیوزک پانی خارج کردیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ پانی میں 2.14 لاکھ کو 1,537 ریلیف کیمپوں میں منتقل کردیا گیا ہے ۔ ڈیزاسسٹر مینجمنٹ ڈپارٹمنٹ کے مطابق ریاست بھر میں 47 بلدیات سیلاب سے متاثر ہیں اور عوام سے کہا گیا ہے کہ قریب میں واقع ریلیف کیمپ منتقل ہوجائیں ۔ قبل ازیں چیف منسٹر ممتا بنرجی نے سیلاب کی صورتحال پر سینئیر عہدیداروں کے ساتھ ایک اجلاس منعقد کیاتھا اور عوام کو فی الفور راحت اور امداد فراہم کرنے کے لیے ایک خصوصی کنٹرول روم بھی قائم کیا گیا ہے ۔ چیف منسٹر کے علاوہ ریاست کے دیگر 4 وزراء بھی متاثرہ علاقوں کا دورہ کریں گے ۔ مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے کل شب ٹیلی فون پر چیف منسٹر سے سیلاب کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا تھا

TOPPOPULARRECENT