Monday , August 21 2017
Home / سیاسیات / مغربی بنگال کے انتخابات میں 244کروڑ پتی امیدوار

مغربی بنگال کے انتخابات میں 244کروڑ پتی امیدوار

دولت اور جرائم کے اعتبار سے حکمران ترنمول کانگریس سرفہرست

کولکتہ۔/3مئی، ( سیاست ڈاٹ کام ) مغربی بنگال میں جاریہ اسمبلی انتخابات میں مقابلہ کرنے والے 1,961 امیدواروں میں 244 کروڑ پتی ہیں جبکہ حکمران ترنمول کانگریس کی فہرست میں 114 امیدوار شامل ہیں۔ ویسٹ بنگال الیکشن واچ اور اسوسی ایشن آف ڈیموکریٹک ریفارمرس کی تجزیاتی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جاریہ سال انتخابات میں جملہ 1,961 امیدوار مقابلہ میں ہیں اور ان میں 244 کروڑ پتی ہیں۔ اس فہرست میں 46 کروڑپتی امیدواروں کے ساتھ بی جے پی دوسرے نمبر پر ہے۔جبکہ کانگریس کے 31اور آزاد امیدوار 19، سی پی ایم 13، بی ایس پی 4، آر ایس پی 2، فارورڈ بلاک 2 اور دیگر سیاسی تنظیموں بشمول آر جے ڈی کے 11 امیدوار کروڑ پتی ہیں اور 245 موجودہ ارکان اسمبلی میں سے 81 دوبارہ مقابلہ کررہے ہیں۔ گزشتہ انتخابات سے جاریہ سال کے انتخابات تک جن ارکان اسمبلی کے اثاثہ جات میں غیر معمولی اضافہ ہوا ہے ان میں وزیر ڈیساسٹر مینجمنٹ جاوید خاں سرفہرست ہیں۔ جاوید خان کے اثاثہ جات کی مالیت سال 2011 میں 2.16کروڑ سے بڑھ کر سال 2016میں 17.29 کروڑ تک پہنچ گئی ۔ ان کے بعد پارٹی کے دیگر ارکان اسمبلی سمن کمار مہاپترا اور امیت مترا دوسرے اور تیسرے مقام پر ہیں۔ ریاستی وزیر آبی تحقیقات و ترقیات مہاپترا کے اثاثہ جات کی مالیت 2011 میں 1.76کروڑ سے بڑھ کر 2016 میں 2.83 کروڑ ہوگئی۔ علاوہ ازیں وزیر فینانس امیت مترا کے اثاثہ جات 2011 میں 7.08 کروڑ جو کہ2016 میں 11.74کروڑ تک پہنچ گئے ہیں جبکہ شیام پوکر حلقہ سے بی جے پی امیدوار سوما برتا منڈل کروڑ پتیوں کی فہرست میں دوسرے نمبر پر ہیں جن کے اثاثہ جات 286,52:287 ہیں۔ مزید برآں حکمران ترنمول کانگریس کے 354 امیدواروں میں سے 86امیدواروں کے خلاف فوجداری مقدمات درج ہیں جبکہ بی جے پی کے 66، سی پی ایم کے 58 اور کانگریس کے 41امیدوار بھی مجرمانہ ریکارڈ رکھتے ہیں حتیٰ کہ 24امیدواروں کے خلاف قتل کیس درج ہیں۔

 

TOPPOPULARRECENT