Monday , August 21 2017
Home / سیاسیات / مغربی بنگال کے بلدی انتخابات تشدد سے متاثر

مغربی بنگال کے بلدی انتخابات تشدد سے متاثر

زائد از 70 فیصد ووٹوں کا استعمال ، بیدھانگر میں کل سی پی ایم کا بند
کولکاتا، 3 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) چند مقامات پر تشدد اور جرنلسٹوں پر حملے آج مغربی بنگال میں دو میونسپل کارپوریشنس کیلئے منعقدہ انتخابات کو متاثر کرگئے جبکہ زائد از 70 فیصد لوگوں نے اپنے ووٹوں کا استعمال کیا۔ اس چناؤ میں تشدد کے علاوہ مبینہ دھاندلیوں کے واقعات کا الزام عائد کرتے ہوئے سی پی ایم نے علاقہ راجرہات ۔ بیدھانگر میں دوشنبہ کو بند منانے کا اعلان کیا ہے۔ اسٹیٹ الیکشن کمشنر ایس آر اپادھیائے نے نیوز ایجنسی ’پی ٹی آئی‘ کو بتایا کہ شام 5 بجے تک بیدھانگر اور آسنسول میں رائے دہی کا تناسب 71 فیصد درج کیا گیا۔ ’’ہم یہ دونوں مقامات سے تشدد، رگنگ اور بدعنوانیوں کی شکایتیں وصول ہوئیں ہیں۔ ہم ان شکایات کا جائزہ لے رہے ہیں اور لائحہ عمل طئے کریں گے۔‘‘  انھوں نے کہاکہ بعض مقامات پر میڈیا کے نمائندوں پر حملے کئے گئے ۔ سی سی ٹی وی کیمروں کے فوٹیج دیکھنے کے بعد پولیس کو ضروری کارروائی کیلئے کہا جائے گا۔ بیدھانگر کارپوریشن میں مراکز رائے دہی پر زبردستی قبضہ کا حکمراں ترنمول کانگریس کے خلاف الزام عائد کرتے ہوئے سی پی ایم نے پیر کو 12 گھنٹے کا بند کا اعلان کیا ہے۔ سی پی ایم لیڈر گوتم دیو نے بتایا کہ ٹی ایم سی رگنگ اور غنڈہ گردی میں ملوث ہے۔

TOPPOPULARRECENT