Thursday , September 21 2017
Home / ہندوستان / مغربی بنگال کے دیہاتوں میں مسلمانوں کی ابتر حالت

مغربی بنگال کے دیہاتوں میں مسلمانوں کی ابتر حالت

38 فیصد خاندانوں کی ماہانہ آمدنی 2500 روپئے سے بھی کم
کولکتہ ۔ 15 ۔ فروری (سیاست ڈاٹ کام) رضاکارانہ تنظیموں کی مطالعاتی رپورٹ میں یہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ مغربی بنگال کے دیہاتوں میں 40 فیصد مسلم خاندانوں کی ماہانہ آمدنی 2,500 تک محدود ہے۔ نوبل انعام یافتہ امریتا سین نے کل ’’لیونگ ریالیٹی آف مسلمس ان ویسٹ بنگال کی مطالعاتی رپورٹ جاری کی جس میں یہ انکشاف کیا گیا ہے کہ مغربی بنگال کے دیہاتوں میں مقیم 80 فیصد مسلم خاندانوں کی ماہانہ آمدنی 5,000 روپئے سے بھی کم ہے جو کہ سطح  غربت سے نیچے زندگی گزارنے والوں کی آمدنی کے قریب قریب ہے اور قلیل آمدنی سے 5 افراد پر مشتمل مسلم خاندان کی حالت زار ظاہر ہوجاتی ہے۔ ستم ظریفی یہ ہے کہ 38.8 فیصد مسلم خاندانوں کی ماہانہ آمدنی 2,500 روپئے یا اس سے بھی کم ہے ۔ ایک اور رضاکارانہ تنظیم گائیڈنس گلڈ ا ینڈ پرٹاچی ٹرسٹ نے یہ اعداد وشمار پیش کئے ہیں۔ یہ سروے مغربی بنگال کے 325 دیہاتوں اور 73 شہری علاقوں میں 81 کمیونٹی ڈیولپمنٹ بلاکس اور 30 میونسپل اداروں سے نمونے حاصل کر کے کیا گیا ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT