Saturday , September 23 2017
Home / عرب دنیا / مقبوضہ مغربی کنارہ میں چاقوزنی اور کارحملوں کا سلسلہ جاری

مقبوضہ مغربی کنارہ میں چاقوزنی اور کارحملوں کا سلسلہ جاری

پانچ اسرائیلی شہری زخمی ‘ فوج نے حملہ آوروں کو گولی مار کر ہلاک کردیا
یروشلم۔8نومبر ( سیاست ڈاٹ کام )زبردستی کار داخل کر کے حملہ کرنے اور چاقو زنی کی وارداتوں سے مغربی کنارہ میں آج پانچ اسرائیلی شہری زخمی ہوگئے جب کہ دو مبینہ حملہ آوروں کو گولی مار کر ہلاک کردیا گیا ۔ عہدیداروں کے بموجب ایک ہفتہ طویل تشدت کی لہر کا یہ تازہ ترین واقعہ ہے ۔ پہلا واقعہ میں ایک فلسطینی شہری نے اپنی کار اسرائیلیوں کے ایک گروپ کے درمیان ایک چوراہے پر گھسا دی جس کی وجہ سے چار افراد زخمی ہوگئے ۔ فوج کی فائرنگ سے یہ فلسطینی حملہ آور ہلاک ہوگیا ۔ حملہ آور نے مبینہ طور پر اپنی کار ایک ایسے علاقہ میں نبلوس کے جنوب میں اسرائیلیوں کے مجمع کے درمیان زبردستی گھسا دی تھی جو مبینہ طور پر شوقیہ گھوڑسواری کیلئے وہاں جمع تھے ۔ قریب ہی ایک فوجی چوکی تھی جہاں پر تعینات سرحدی پولیس نے فائرنگ کردی ۔ اسرائیلی سرکاری ریڈیو میں دو افراد کے زخمی ہونے اور نازک حالت میں ہونے کی خبر نشر کی گئی ہے ۔ بعدازاں ایک فلسطینی خاتون نے ایک چوکیدار کو مغربی کنارہ نوآبادی میں چاقوزنی کے ذریعہ زخمی کردیا جسے زخمی ہونے والے چوکیدار نے گولی مار کر ہلاک کردیا ۔

پولیس اور فوج کے بموجب یہ واقعہ بیتارللت کے قریب پیش آیا جو یروشلم کے جنوب میں ایک یہودی نوآبادی ہے ۔ فوری طور پر معلوم نہیں ہوسکا کا اس خاتون حملہ آور کا کیا حشر ہوا ۔ چاقو زنی ‘ بندوقوں کے ذریعہ فائرنگ اور کار کے ذریعہ ٹکر دینے کی وارداتوں میں حالیہ دنوں میں اضافہ ہوگیا ہے ۔ فلسطینی علاقوں میں اسرائیلیوں کو ان حملوں کا نشانہ بنایا جارہا ہے ۔ گذشتہ اکٹوبر سے یہ سلسلہ جاری ہے ۔ تشدد کے نتیجہ میں تاحال 73 فلسطینی ہلاک ہوگئے ہیں ۔ جن میں سے آدھے مبینہ طور پر حملہ آور تھے ۔ 9اسرائیلی شہریوں کو اور ایک عرب نژاد اسرائیلی شہری کو ہلاک کیا جاچکا ہے ۔ پُرتشدد احتجاجی مظاہرے متصلہ مشرقی یروشلم میں ‘ مقبوضہ مغربی کنارہ میں غزہ پٹی میںجاری ہے ۔ بے چینی میںحالیہ دنوں میں کچھ کمی ہوئی تھی جب کہ یکادکا حملوں کا سلسلہ جاری ہے ۔ تازہ ترین تشدد اُس وقت ہوا جب کہ وزیراعظم اسرائیل بنجامن نتن یاہو اتوار کے دن صدر امریکہ بارک اوباما سے ملاقات کیلئے روانگی کی تیاری کررہے تھے ۔ اس ملاقات کا موضوع اسرائیل کو امریکی دفاعی امداد ہوگا ۔ جولائی میں بڑی طاقتوں اور ایران کے درمیان نیوکلیئر معاہدہ طئے پانے کے بعد اسرائیل کو دفاعی امداد مشکوک ہوگئی ہے ۔ وزیراعظم اسرائیل توقع ہے کہ اسی موضوع پر صدر امریکہ سے وزیراعظم اسرائیل بات چیت کریں گے ۔

TOPPOPULARRECENT