Thursday , August 24 2017
Home / ہندوستان / مقدس کتاب کی بے حرمتی کیخلاف پرتشدد جھڑپیں پنجاب میں 500 افراد کیخلاف کیس سے دستبرداری

مقدس کتاب کی بے حرمتی کیخلاف پرتشدد جھڑپیں پنجاب میں 500 افراد کیخلاف کیس سے دستبرداری

چندی گڑھ ۔ 16 ۔ اکٹوبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : پنجاب کے ڈپٹی چیف منسٹر سکھبیر سنگھ بادل نے آج ریاستی پولیس کو یہ ہدایت دی ہے کہ سکھوں کی مقدس کتاب گروگرنتھ صاحب کی مبینہ بے حرمتی کے واقعہ پر گذشتہ ایک ہفتہ کے دوران احتجاج کرنے والوں کے خلاف درج تمام کیسوں سے دستبرداری اختیار کرلی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ احتجاجیوں کے جذبات کا اظہار دراصل شدید اشتعال انگیزی کا نتیجہ ہے اور حکومت ان صدمہ انگیز لمحات میں ان کے ساتھ ہے ۔ ڈپٹی چیف منسٹر جو کہ وزارت داخلہ کا قلمدان بھی رکھتے ہیں کہا کہ انہوں نے پنجاب پولیس کو ہدایت دی ہے کہ ریاست کے مختلف مقامات بالخصوص ضلع فرید کوٹ کے دیہاتوں کو ٹکاپور اور بہبول کلاں میں احتجاجیوں کے خلاف درج تمام کیسیس سے دستبرداری اختیار کرلی جائے ۔ انہوں نے کہاکہ میرا ضمیر یہ گوارہ نہیں کرتا کہ کسی نوجوان کا مستقبل تباہ ہوجائے ۔ جنہوں نے مقدس کتاب کی بے حرمتی کے واقعہ پر شدید ردعمل ظاہر کیا تھا ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے پنجابیوں سے پر زور اپیل کی ہے کہ ہر قیمت پر امن اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی برقرار رکھیں اور یہ وعدہ کیا کہ جو کوئی بھی بے حرمتی واقعہ کے ذمہ دار ہیں ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی ۔ واضح رہے کہ مقدس کتاب کی بے حرمتی کے واقعہ کے خلاف مذکورہ دیہاتوں میں احتجاج کے دوران پولیس اور سکھ تنظیموں کے کارکنوں میں تصادم ہوگیا ۔ جس میں 2 نوجوان ہلاک اور 75 سے زائد افراد زخمی ہوگئے ۔ بعد ازاں پولیس نے پرتشدد جھڑپوں کے سلسلہ میں 500 افراد کے خلاف کیسیس درج کیے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT