Sunday , July 23 2017
Home / دنیا / ملائشیا اور شمالی کوریا کے درمیان کشیدگی میں شدت

ملائشیا اور شمالی کوریا کے درمیان کشیدگی میں شدت

پینانگ ؍ کوالالمپور ؍ سیول ۔ 7 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) کم جونگ نیم کے قتل نے شمالی کوریا اور ملائشیا کے درمیان تعلقات انتہائی کشیدہ کردیئے ہیں کیونکہ اب یہ قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں کہ نیم کے قتل کی سازش کوالالمپور میں واقع شمالی کوریا کے سفارتخانے میں رچی گئی۔ ملائشیا کے پولیس سربراہ نے آج ایک اہم بیان دیتے ہوئے کہا کہ اس قتل معاملہ میں مشتبہ افراد سے پوچھ گچھ کرنے ملائشیا پانچ سال تک بھی انتظار کرسکتا ہے۔ یاد رہیکہ شمالی کوریا کے اس اعلان کے بعد ملائشیائی شہریوں کو شمالی کوریا چھوڑنے کی اجازت نہیں دی جائے گی کیونکہ ملائشیا نے بھی شمالی کوریائی شہریوں کو ملک چھوڑنے پر امتناع عائد کردیا ہے۔ ایسا معلوم ہورہا ہیکہ دونوں ممالک اینٹ کا جواب پتھر سے دینے میں دلچسپی رکھتے ہیں۔ لہٰذا اب دونوں ممالک ایک دوسرے سے سردجنگ کا آغاز کرچکے ہیں۔ نیم کے قتل کے بعد شمالی کوریا نے ملائشیا سے اپنا سفیر واپس بلا لیا تھا اور ملائشیا نے بھی ایسا ہی کیا تھا۔ پولیس سربراہ خالد ابوبکر نے کہا کہ ہم پانچ سال تک بھی انتظار کرسکتے ہیں۔ ہوسکتا ہیکہ پانچ سال کے دوران کوئی باہر آجائے کیونکہ ان کا کہنا ہیکہ جس عمارت کا پولیس نے محاصرہ کر رکھا ہے وہاں نیم کے قتل میں ملوث دو مشتبہ افراد چھپے ہوئے ہیں۔ وزیراعظم ملائشیا نجیب رزاق کو بھی بالآخر اس تعلق سے بیان دینے پر مجبور ہونا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ شمالی کوریا میں ملائشیائی شہریوں کو عملاً یرغمال بنادیا گیا ہے جو بین الاقوامی قوانین اور سفارتی آداب کی سراسر خلاف ورزی ہے۔ یاد رہے کہ نیم جونگ قتل اب دونوں ممالک کے درمیان گلے کی ہڈی بن گیا ہے۔ شمالی کوریا نے جب آج ملائشیائی شہریوں کے شمالی کوریا چھوڑنے پر امتناع عائد کردیا تو اس کے بعد کشیدہ تعلقات میں مزید بدمزگی پیدا ہوگئی اور ملائشیا نے بھی اینٹ کا جواب پتھر سے دیتے ہوئے ملائشیا میں شمالی کوریا کے سفارتخانے کے اسٹاف اور دیگر عہدیداروں کے ملائشیا چھوڑنے پر امتناع عائد کردیا۔ جیسی کرنی ویسی بھرنی والی صورتحال سے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کشیدہ تو ہو ہی رہے ہیں اس سے عوام میں بھی تجسس، بے چینی اور خوف کا ماحول ہے۔ یہاں اس بات کا تذکرہ بھی ضروری ہیکہ ملائشیا نے گذشتہ ہفتہ شمالی کوریا کے سفیر کے اخراج کا اعلان کیا تھا جس کے بعد وہ بیجنگ کیلئے پرواز کر گئے تھے۔ بعدازاں جاری کی گئی تصاویر سے بھی ان کی روانگی کی توثیق ہوگئی کیونکہ انہیں طیارہ کے اکنامک کلاس میں بیٹھے ہوئے دکھایا گیا۔ تازہ ترین اطلاعات کے مطابق تمام ملائشیائی شہری جو ڈی پی آر کے میں ہیں، کو عارضی طور پر ملک چھوڑنے کی اجازت نہیں ہوگی جس کی مدت کا تعین کچھ اس طرح کیا گیا ہیکہ نیم کا ملائشیا میں جو قتل ہوا ہے، اس معاملہ کی چھان بین اور تحقیقات کی تکمیل تک شہریوں کو شمالی کوریا چھوڑنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

Leave a Reply

Top Stories

TOPPOPULARRECENT