Wednesday , September 20 2017
Home / Top Stories / ملائیشیا میں وزیراعظم نجیب رزاق کی بیدخلی کیلئے ریالی

ملائیشیا میں وزیراعظم نجیب رزاق کی بیدخلی کیلئے ریالی

رشوت ستانی کے خلاف احتجاج ، اصلاحات کا مطالبہ ، کوالالمپور میں انسانی سروں کا سمندر

کوالالمپور ۔ /29 اگست ( سیاست ڈاٹ کام) ملائیشیاء کے دارالحکومت کولاالمپور میں ہزاروں افراد کی مخالف حکومت ریالی نکالی گئی ۔ مظاہرین نے وزیراعظم نجیب رزاق کی بیدخلی کا مطالبہ کرتے ہوئے وزیراعظم کے خلاف رشوت کے الزامات پر برہمی ظاہر کی اور کہا کہ ملک میں اصلاحات کا عمل ضروری ہے۔ آن لائین پر موصولہ رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ تقریباً 40,000 احتجاجیوں نے ڈاؤن ٹاؤن کولاالمپور میں جمع ہوکر نجیب رزاق کے خلاف مظاہرہ کیا ۔ اس موقع پر موجود پولیس کے سینکڑوں جوانوں کی پرواہ نہ کرتے ہوئے ہزاروں افراد نے اپنے ہاتھوں میں پلے کارڈس تھامے احتجاج میں حصہ لیا ۔ یہ ریالی این جی اوز گروپ نے نکالی تھی ۔ پولیس نے اس ریالی کو غیر قانونی قرار دیا تھا ۔ اس این جی اوز نے ملک میں شفافیت لانے اور اصلاحات کے ذریعہ ازادانہ منصفانہ انتخابات کا مطالبہ کیا  ۔ وال اسٹریٹ جرنل کی جانب سے افشا شدہ راز کی دستاویزات کی اشاعت کے بعد ملائیشیا میں شدید ناراضگی پیدا ہوئی ہے ۔ اس وال اسٹریٹ جرنل میں بتایا گیا ہے کہ وزیراعظم نجیب رزاق نے اپنے خانگی بنک اکاؤنٹس میں ملائیشیائی فنڈ اکھٹا کرنے والی کمپنی سے 700 ملین امریکی ڈالر جمع کئے ہیں ۔ بعد ازاں انہوں نے وصاحت کی تھی کہ یہ رقم مشرق وسطی سے عطیہ کے طور پر دی گئی ہے ۔کولاالمپور میں نکالی گئی ریالی میں شریک ہزاروں افراد نے زرد ٹی شرٹس پہن کر سروں پر پٹیاں باندھی تھیں جس پر وزیراعظم کے خلاف نعرے لکھے ہوئے تھے ۔

پیر کے روز ملائیشیا کا 58 واں قومی دن منایا جارہا ہے ۔ احتجاجیوں نے اس بات سے اتفاق کیا کہ وہ اس اسکوائر میں داخل نہیں ہوں گے جہاں قومی دن منایا جارہا ہے ۔ اسی دوران وزیراعظم نجیب رزاق نے کہا کہ جو لوگ حکومت کے خلاف مظاہروں میں ملوث ہیں وہ  یوم آزادی تقریب کو بند کردینے کے لئے ذمہ دار ہوں گے اور یہ لوگ ملک کے لئے محبت نہیں رکھتے ۔ ایک کارکن نے کہا کہ جو لوگ ریالی میں حصہ لے رہے ہیں ان کا ارادہ حکومت گرانے کا نہیں ہے بلکہ ہم چاہتے ہیں کہ حکومت اپنی غلطیوں کو سدھارے ۔ سابق وزیراعظم مہاتر محمد ، وزیراعظم نجیب کے شدید مخالف ہیں ۔ انہوں نے کولاالمپور کے باہر پرہجوم اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بعض قائدین اپنے فرائض کو فراموش کرچکے ہیں ۔ یہ قائدین عوام کے ووٹوں سے منتخب ہوکر اپنا فرض بھول جاتے ہیں اور یہ خیال نہیں رہتا کہ وہ عوام کے نمائندے ہیں ۔ جبکہ عوام کے دیگر ہمدرد واپس اقتدار پر آئیں گے ۔ آپ کو کرسی چھوڑنی ہوگی ۔

TOPPOPULARRECENT