Thursday , August 17 2017
Home / دنیا / ملائیشیا کے لاپتہ طیارہ کی تلاش معطل

ملائیشیا کے لاپتہ طیارہ کی تلاش معطل

مہلوکین کے ورثاء برہم، تمام عصری ٹیکنالوجی کے باوجود ناکامی کا اعتراف
سڈنی ۔ 17 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) ملائشیا کا MH-370 طیارہ جو تقریباً تین سال قبل پراسرار طور پر لاپتہ ہوگیا تھا اور جس کی تلاش سمندروں میں گذشتہ دو سال سے جاری تھی، تاہم اب اس کی تلاش کا کام معطل کردیا گیا ہے۔ حادثہ کے وقت طیارہ میں 239 مسافرین سوار تھے جن میں پانچ ہندوستانی بھی تھے۔ یہ اطلاع ملتے ہی مہلوک مسافرین کے رشتہ داروں نے یہ کہہ کر غم و غصہ کا اظہار کرنا شروع کردیا کہ طیارہ کی تلاش کا کام معطل کردینا حکام کی ایک انتہائی غیرذمہ دارانہ حرکت ہے۔ دریں اثناء چینی، آسٹریلیا اور ملائشیائی عہدیداروں کی جانب سے ایک مشترکہ بیان جاری کیا گیا ہے جس میں وضاحت کی گئی ہیکہ آج کے اس عصری دور میں جہاں سائنس اور ٹیکنالوجی کی ہر سہولت دستیاب ہے اور ساتھ ہی ساتھ ماہرین کی ایک ٹیم کی تجاویز کے باوجود بھی تلاش کرنے والی ٹیم حادثہ کا شکار طیارہ کے ملبہ کا پتہ نہیں چلا سکی۔ یہ تینوں ممالک عرصہ دراز سے زیرسمندر اپنی تلاش کا کام جاری رکھے ہوئے تھے۔ 8 مارچ 2014ء کو کوالالمپور سے بیجنگ کیلئے روانہ ہونے والا طیارہ اپنی منزل مقصود پر نہیں پہنچ سکا۔ زیرسمندر تلاشی کا کام بھی روک دیا گیا ہے۔ تاہم کام روکنے کا متعلقہ حکام کو بیحد دکھ ہے۔ دنیا کی عصری تاریخ میں بوئنگ 777-200 کے لاپتہ ہونے کے واقعہ کو آج بھی انتہائی پراسرار کہا جاتا ہے۔ تلاشی ٹیم نے سمندر کا چپہ چپہ کھنگال ڈالا جس پر ہزاروں ڈالرس خرچ کئے گئے۔ تاہم آج تک کوئی قابل لحاظ اطلاع یا معلومات حاصل نہیں ہوسکی۔ یہاں اس بات کا تذکرہ بھی ضروری ہیکہ گذشتہ سال آسٹریلیا، چین اور ملائشیا نے یہ مشترکہ بیان دیا تھا لاپتہ طیارہ اگر سمندر میں 120,000 مربع کیلو میٹر تک تلاش کرنے کے باوجود بھی نہیں ملا تو تلاشی کاکام معطل کردیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT