Friday , October 20 2017
Home / شہر کی خبریں / ملنا ساگر پراجیکٹ کے خلاف احتجاج پرتشدد

ملنا ساگر پراجیکٹ کے خلاف احتجاج پرتشدد

پولیس کا لاٹھی چارچ ۔ آنسو گیس کے شیلس برسائے گئے۔10 زخمی
سنگاریڈی 24 جولائی ( پی ٹی آئی ) میدک ضلع میں یراولی گاوں کے قریب پولیس لاٹھی چارچ میں کم از کم 10 کسان زخمی ہوگئے جو ملنا ساگر آبپاشی پراجیکٹ سے اپنے گاوں زیر آب آنے کے اندیشوں پر احتجاج کر رہے تھے ۔ ان پر پولیس نے لاٹھی چارچ کیا ۔ پولیس نے ہجوم کو منتشر کرنے آنسو گیس کے شیلس بھی برسائے جبکہ ہجوم نے پولیس پر سنگباری کی ۔ حالات اس وقت بگڑنا شروع ہوئے جب گاوں والوں کو بین ریاستی ہائی پر آگے بڑھنے سے پولیس نے یراولی کے قریب روک دیا ۔ اس کے بعد احتجاجیوںاور پولیس کے ما بین گرما گرم مباحث ہوئے ۔ اس کے بعد ایک احتجاجی نے خود سوزی کی کوشش بھی کی ۔ ایک پولیس عہدیدار نے کہا کہ احتجاجی جب سنگباری کرنے لگے پہلے پولیس نے لاٹھی چارچ کیا بعد ازاں انہیں منتشر کرنے آنسو گیس کے شیلس برسائے ۔ انہوں نے بتایا کہ کم از کم دس افراد بشمول تین خواتین لاٹھی چارچ میں زخمی ہوئے ہیں اور انہیں دواخانے میں شریک کیا گیا ہے ۔ انہوں نے ان اطلاعات کی تردید کی کہ پولیس نے ہجوم کو منتشر کرنے ہوائی فائرنگ کی ہے ۔ پولیس کے بموجب اب صورتحال قابو میں ہے ۔ اس دوران وزیر آبپاشی تلنگانہ مسٹر ٹی ہریش راؤ نے احتجاجیوںاور پولیس سے اپیل کی کہ وہ صبر و تحمل سے کام لیں۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو چاہئے کہ وہ اپوزیشن جماعتوں کے جال میں نہ پھنسیں۔ ریاست میں کے چندر شیکھر راؤ حکومت نے یتی گڈہ کشٹا پور میں ملنا ساگر آبپاشی پراجیکٹ تعمیر کرنا چاہتی ہے جس کیلئے 12,000 ایکڑ اراضیات حاصل کی جا رہی ہیں۔ گاوں کے لوگ حصول اراضیات کی مخالفت کر رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT