Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / ملک بھر میں تلنگانہ حج کمیٹی کا ریکارڈ ، کم وقفہ میں پانچ ہزار سے زائد عازمین کی روانگی

ملک بھر میں تلنگانہ حج کمیٹی کا ریکارڈ ، کم وقفہ میں پانچ ہزار سے زائد عازمین کی روانگی

بارگاہ خداوندی میں سجدہ شکر ، پروفیسر ایس اے شکور اسپیشل آفیسر حج کمیٹی کا بیان
حیدرآباد ۔  9  ستمبر  (سیاست  نیوز) تلنگانہ حج کمیٹی نے جاریہ سال حج سیزن میں ملک بھر میں کم وقفہ میں 5452 عازمین حج کی روانگی کے انتظامات کا ریکارڈ قائم کیا ہے ۔ حج سیزن 2015 ء کے لئے سنٹرل حج کمیٹی نے دیگر ریاستوں کیلئے 14 تا 16 دن پر مشتمل  روانگی کا شیڈول جاری کیا تھا لیکن تلنگانہ حج کمیٹی کیلئے صرف 7 دن کا شیڈول تیار کیا گیا ہے جس میں تین ریاستوں کے عازمین حج کی حیدرآباد سے روانگی کو یقینی بنانا تھا۔ آندھراپردیش کی تقسیم کے باوجود تلنگانہ حج کمیٹی کو اپنی ریاست کے علاوہ آندھراپردیش اور کرناٹک کے پانچ اضلاع سے تعلق رکھنے والے عازمین کے انتظامات کی ذمہ داری دی گئی  اور اس چیالنج کو تلنگانہ حج کمیٹی نے قبول کرتے ہوئے کم خرچ اور کم اسٹاف کے باوجود کیمپ کو کامیابی سے ہمکنار کیا۔ اسپیشل آفیسر حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور نے حج کیمپ کے کامیاب اختتام پر بارگاہ خدا وندی میں سجدہ شکر ادا کیا اور کہا کہ صرف اللہ تعالیٰ کی مدد کے ذریعہ  حج کمیٹی نے اس چیالنج کی تکمیل کی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ 7 دن میں حیدرآباد سے ایر انڈیا کی 16 فلائیٹس روانہ ہوئیں جن میں مجموعی طور پر 5452 عازمین حج سعودی عرب روانہ ہوئے۔ حج ہاؤز کی عمارت واقع نامپلی میں حج کیمپ منعقد کیا گیا اور عازمین کی زائد تعداد کو دیکھتے ہوئے عمارت سے متصل زیر تعمیر کامپلکس کی تین منزلوں کو کیمپ کیلئے استعمال کیا گیا۔ حج ہاؤز کی عمارت اور زیر تعمیر کامپلکس میں 1500 عازمین حج کے قیام کی گنجائش کے باوجود حج کمیٹی نے روزانہ 2,200 عازمین حج کے قیام کے انتظامات کئے۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ جگہ کی کمی اور روزانہ تین فلائیٹس کے باعث عازمین کو کسی قدر دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا تھا ۔ تاہم حج کمیٹی نے ان کے ہر مسئلہ کی خوشگوار یکسوئی کی کوشش کی۔ دیگر ریاستوں میں عازمین حج کی روانگی کا سلسلہ ابھی جاری ہے لیکن تلنگانہ حج کمیٹی کے ذریعہ 7 دن میں اس مرحلہ کو مکمل کرلیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ سابق میں جو کیمپس منعقد کئے گئے، اس کی مدت تقریباً 16 دن تھی اور روزانہ ایک یا پھر دو فلائیٹس روانہ ہوتے تھے۔ سنٹرل حج کمیٹی کی جانب سے طئے کردہ شیڈول کی تکمیل کیلئے اسپیشل آفیسر کو ایک ہفتہ تک دن رات حج ہاؤز میں ہی قیام کرنا پڑا۔ جاریہ سال حج کمیٹی کے اگزیکیٹیو آفیسر کا عہدہ خالی ہے جس کے باعث اسپیشل آفیسر کی ذمہ داریوں میں مزید اضافہ ہوگیا تھا۔ حیدرآباد ایرپورٹ سے تلنگانہ کے 2963 ، آندھراپردیش 1819 اور کرناٹک 654 عازمین حج روانہ ہو ئے۔ 15 عازمین کو ایر انڈیا کی شیڈول فلائیٹ کے ذریعہ روانہ کیا گیا۔ گرین زمرہ میں 2154 اور عزیزیہ میں 2976 عازمین قیام پذ یر ہے۔ حیدرآبادی رباط تلنگانہ کے 321 عازمین کے قیام کے انتظامات کئے گئے جبکہ کرناٹک اور مہاراشٹرا کے سابق حیدرآباد اسٹیٹ کے اضلاع سے تعلق رکھنے والے 276 عازمین کیلئے رباط میں قیام کی سہولت فراہم کی گئی۔ جاریہ سال 2828 ء مرد عازمین اور 2623 خاتون عازمین روانہ ہوئے۔

 

دو سال سے کم عمر کے 7 کمسن عازم اور 18 خادم الحجاج بھی روانہ ہوئے ہیں۔ 70 سال سے زائد عمر کے محفوظ زمرہ کے تحت تلنگانہ سے 643 ء اور آندھراپردیش سے 161 اور مسلسل چوتھی مرتبہ درخواست دینے والے محفوظ زمرہ سے تلنگانہ میں 894 اور آندھراپردیش میں 61 عازمین روانہ ہوئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ سے 316 اور آندھراپردیش سے 301 عازمین نے اپنا سفر منسوخ کردیا۔ اسپیشل آفیسر کے مطابق کامیاب حج کیمپ کے انعقاد کیلئے شہر اور اضلاع میں 14 ٹریننگ کیمپں منعقد کئے گئے۔ سنٹرل حج کمیٹی نے پہلی مرتبہ عازمین حج کیلئے سوٹ کیس کا انتظام کیا۔ اننت پور اور چتور کے 578 عازمین بنگلور سے روانہ ہوئے ہیں ۔ پروفیسر ایس اے شکور کے مطابق حج کیمپ کے تمام کام ٹنڈرس کے ذ ریعہ الاٹ کیئے گئے تھے اور تمام اقلیتی اداروں نے کیمپ کے کامیاب انعقاد میں مکمل تعاون کیا۔ انہوں نے بتایا کہ سعودی عرب سے تمام خادم الحجاج مسلسل ربط میں ہیں اور عازمین حج کی خیریت کی اطلاع دے رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ مکہ مکرمہ کی عمارتوں اور رباط میں بہترین انتظامات کئے گئے۔ ناظر رباط حسین محمد الشریف نے رباط کے عازمین کیلئے مفت کھانے کا انتظام کیا ہے جبکہ حج کمیٹی کی جانب سے مدینہ منورہ میں تمام حجاج کرام کیلئے کھانے کا انتظام کیا گیا ہے۔ حج کرام کی واپسی کا 14 اکتوبر سے آغاز ہوگا اور 20 اکتوبر کو آخری قافلہ مدینہ منورہ سے حیدرآباد پہنچے گا۔

TOPPOPULARRECENT