Wednesday , May 24 2017
Home / Top Stories / ملک بھر میں نوٹوں کی تبدیلی کیلئے عوام میں بے چینی ، بینکوں پر طویل قطاریں ، دھکم پیل

ملک بھر میں نوٹوں کی تبدیلی کیلئے عوام میں بے چینی ، بینکوں پر طویل قطاریں ، دھکم پیل

ناکارہ اے ٹی ایمس سے صارفین میں زبردست برہمی ، مفاد عامہ کے بلز کی ادائیگی کیلئے قدیم نوٹوں کے چلن میں 14 نومبر تک توسیع

نئی دہلی ۔ /11 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) ملک بھر کی مختلف بینکوں پر نوٹوں کی تبدیلی کے ضرورتمند عوام کی قطاریں دن بہ دن طویل ہورہی ہیں ۔ جس کے ساتھ ہی مسئلہ پر عوام میں الجھن ، بے چینی ، برہمی و افراتفری بھی بڑھتی جارہی ہے ۔ اس دوران نقد رقم فراہم کرنے والے خود کار مشین (اے ٹی ایم) بھی صحیح انداز میں کام نہیں کررہے ہیں ۔ حالانکہ ان میں نئے کرنسی نوٹوں کا ذخیرہ کرنے کیلئے تمام اے ٹی ایم دو دن تک بند رکھے گئے تھے ۔ عوام کی کثیر تعداد اپنے روز مرہ کے مصارف کی تکمیل کے لئے درکار نقد رقم نکالنے کیلئے مختلف بینکوں اور اے ٹی ایم آڈیٹس پر طویل قطاروں میں کئی گھنٹوں کھڑے دیکھے گئے ۔ 500 اور 1000 روپئے کے کرنسی نوٹوں کو منگل کی نصف شب سے اچانک کالعدم کرنے وزیراعظم نریندر مودی کے اعلان کے بعد سے عوام اپنی ضروریات زندگی کی  تکمیل کیلئے نقد رقم کے سخت ضرورتمند ہیں اور بینکوں کے علاوہ اے ٹی ایم پر رات کے پچھلے پہر سے طویل قطاروں میں جمع ہورہے ہیں ۔ بینک عہدیداروں کا کہنا ہے کہ تمام اے ٹی ایمس سے قدیم نوٹ ہٹاکر نئے نوٹ رکھے جاچکے ہیں اور وہ (اے ٹی ایم) کل سے باقاعدہ اپنی معمول کی کارکردگی کا آغاز کریں گے جن میں 500 روپئے اور 2000 روپئے کے نئے کرنسی نوٹ رکھے جاچکے ہیں ۔

 

تاہم اے ٹی ایمس سے /18 نومبر 2016 ء تک فی کارڈ یومیہ صرف  2000 روپئے نکالنے کی سہولت رہے گی ۔ /19 نومبر سے 4000 روپئے یومیہ نکالنے کی سہولت دی جائے گی ۔ ملک کے سب سے بڑے بینکنگ ادارہ ایس بی آئی نے کہا ہے کہ اے ٹی ایمس کی معمول کے مطابق کارکردگی اندرون 10 دن بحال ہوجائے گی ۔ ملک میں تقریباً دو لاکھ اے ٹی ایمس ہیں جو اگرچہ 500 اور 1000 روپئے کے نوٹس جاری کرسکتے ہیں لیکن ان سے 100 یا 2000 روپئے کے نوٹس جاری نہیں کئے جاسکتے ۔ چنانچہ انہیں بھی ان کرنسی نوٹوں کی اجرائی کے قابل بنایا جارہا ہے ۔ بینکوں اور منتخب پوسٹ آفس پرانے نوٹوں کی تبدیلی گزشتہ سے شروع ہوگئی تاہم ہر شخص کو 4000 روپئے کی تبدیلی کی حد مقرر کی گئی ہے ۔ بینکوں سے چیکوں کے ذریعہ ایک دن میں 10,000 روپئے اور ایک ہفتہ میں زیادہ سے زیادہ 20000 روپئے نکالنے کیلئے خصوصی کاؤنٹرس قائم کئے گئے ہیں ۔ یہ حد /24 نومبر تک برقرار رہے گی ۔ تمام بینکس ہفتہ اور اتوار کو توقع ہے کہ شام 7 بجے تک کام کریں گے۔

 

سرکاری بلز کی ادائیگی کیلئے پرانے نوٹوں کے چلن میں توسیع
یہاں یہ بات دلچسپ ہے کہ مفاد عامہ کے بلز جیسے بر قی ، آبرسانی بلز ، سرکاری جرمانوں کی ادائیگی کے علاوہ سرکاری پٹرول پمپس ، سرکاری دواخانوں ، میٹرو اور ریلوے ٹکٹوں کیلئے /11 نومبر تک قدیم نوٹوں کی ادائیگی کی مہلت دی گئی تھی جو آج ختم ہوگئی جس کے ساتھ ہی اس میں 14 نومبر تک توسیع دی گئی ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT