Monday , June 26 2017
Home / شہر کی خبریں / ملک میں این ڈی اے دور حکومت کے دوران یومیہ 35 کسانوں کی خود کشی

ملک میں این ڈی اے دور حکومت کے دوران یومیہ 35 کسانوں کی خود کشی

خانگی انشورنس کمپنیوں کو فائدہ کے لیے بیمہ اسکیم متعارف ، ترجمان اے آئی سی سی راجیو شکلا کا بیان
حیدرآباد ۔ 22 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : ترجمان آل انڈیا کانگریس کمیٹی راجیو شکلا نے کہا کہ این ڈی اے کے دور حکومت میں روزانہ سارے ملک میں 35 کسان خود کشی کررہے ہیں ۔ خانگی انشورنس کمپنیوں کو فائدہ پہونچانے کے لیے فصل بیمہ اسکیم متعارف کرانے کا الزام عائد کیا ۔ آج گاندھی بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات بتائی ۔ اس موقع پر صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اتم کمار ریڈی سکریٹری اے آئی سی سی وی ہنمنت راؤ کے علاوہ دوسرے موجود تھے ۔ راجیو شکلا نے کہا کہ این ڈی اے حکومت کی مخالف زرعی پالیسی سے ملک بھر میں روزانہ 35 کسان خود کشی کررہے ہیں اور زرعی شعبہ بحران کا شکار ہوچکا ہے ۔ ہر سال زرعی پیداوار گھٹ رہی ہے اور کسانوں کی اموات میں اضافہ ہورہا ہے ۔ سال 2014 میں 12,360 سال 2015 میں 12,602 سال 2016 میں تقریبا 14 ہزار کسانوں نے خود کشی کرلی ہے ۔ وزیراعظم نریندر مودی نے سوامی ناتھن کمیشن کی سفارشات پر عمل کرنے زرعی سرمایہ کاری پر 50 فیصد آمدنی سے فروخت کرنے کے لیے اقل ترین قیمت ادا کرنے کا تیقن دیا ۔ مگر اس پر کوئی عمل آوری نہیں کی ۔ ملک میں کسان مسائل سے دم توڑ رہے ہیں ۔ وزیراعظم نریندر مودی کارپورٹ اداروں ، تاجرین کی آؤ بھگت میں مصروف ہے ۔ کسانوں کو تازہ قرضہ جات کی ادائیگی میں مرکزی حکومت پوری طرح ناکام ہوگئی ۔ مرکزی حکومت کی جانب سے متعارف کردہ فصل بیمہ اسکیم کسانوں کے بجائے خانگی کمپنیوں کے لیے فائدہ مند ثابت ہورہی ہے ۔ ان کمپنیوں کو خریف سیزن میں سال 2016 کے دوران 17,184 کروڑ روپئے پریمیم ادا کئے گئے ۔ جس کے بدلے میں ان کمپنیوں نے کسانوں کو نقصانات کی پابجائی کے لیے صرف 6808 کروڑ روپئے فراہم کئے ہیں ۔ اس بیمہ اسکیم سے خانگی کمپنیوں کو 10,376 کروڑ روپئے کا فائدہ ہوا ہے ۔ مرکز کی جانب سے کسانوں فلاح و بہبود کے لیے متعارف کردہ اسکیمات ، نیشنل فوڈ سیکوریٹی مشین ، راشٹریہ کروشی وکاس یوجنا ، نیشنل ہارٹیکلچر مشین ، رین شیڈ ڈیولپمنٹ نیشنل بمبو مشین ، پرمپارا گھاٹ کروشی وکاس یوجنا کے علاوہ دوسری اسکیمات کو نظر انداز کرنے کا وزیراعظم نریندر مودی پر الزام عائد کیا ۔ راجیو شکلا نے تلنگانہ حکومت پر زرعی شعبہ اور کسانوں کو نظر انداز کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں مرچ کے کسان پریشان ہیں حکومت نے ان پر کوئی توجہ نہیں دی ۔ کسانوں کے معاملے میں ٹی آر ایس اور بی جے پی ایک ہی سکے کے دو رخ ہیں ۔۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT