Tuesday , September 19 2017
Home / شہر کی خبریں / ملک میں سولار پاور کی انسٹالڈ کپاسٹی سے متجاوز

ملک میں سولار پاور کی انسٹالڈ کپاسٹی سے متجاوز

نیشنل سولار مشن کے تحت 2021-22 تک 100gw سولار پاور پیدا کرنے حکومت کا نشانہ
حیدرآباد ۔ 15 ۔ جنوری : ( سیاست نیوز) : ہندوستان میں سولار پاور کی انسٹالڈ کپاسٹی 5000mw کے سنگ میل سے متجاوز ہوگئی ہے اور جاریہ مالیاتی سال میں 1385mw کی انسٹالڈ کپاسٹی کے ساتھ کمونیسٹیو انسٹالڈ کپاسٹی 5130mw تک پہنچ گئی ۔ ریاست راجستھان 1264mw کے ساتھ ملک میں پہلے نمبر پر ہے اس کے بعد گجرات 1024mw ، مدھیہ پردیش 679mw ، ٹامل ناڈو 419mw ، مہاراشٹرا 379m2 اور آندھرا پردیش 357mw کے ساتھ پانچویں مقام پر ہے ۔ حکومت نے نیشنل سولار مشن کے تحت 2021-22 تک 100gw شمسی توانائی پیدا کرنے کا ایک نشانہ مقرر کیا ہے ۔ جس میں حکومت نے 60gw گراونڈ ماونٹیڈ گرڈ کنیکٹیڈ سولار پاور اور 40gw روف ٹاپ گریڈ انٹریکٹیو سولارپاور کے ذریعہ پیدا کرنے کا منصوبہ بنایا ہے ۔ اس مقصد کے لیے اس نے سال واری نشانے مقرر کئے ہیں اور جاریہ سال کے لیے اس نے 2000mw اور آئندہ سال کے لیے 12000mw برقی پیداوار کرنے کا پروگرام بنایا ہے ۔ جس کے لیے مرکز اور ریاستی حکومتوں نے نشانہ کے حصول کے لیے مختلف اسکیمات کا اعلان کیا ہے ۔ وزارت نئی اور قابل تجدید توانائی نے اس سلسلہ میں کئی پراجکٹس شروع کئے ہیں جیسے اسکیم فار ڈیولپمنٹ آف سولار پارکس ، الٹرا میگا سولار پاور پراجکٹس وغیرہ ۔ اس کے علاوہ اس نشانہ کو حاصل کرنے کے لیے 15000mw گرڈ کنیکٹیڈ کے قیام کی اسکیمات ہیں ۔اس سلسلہ میں وزارت کی جانب سے روف ۔ ٹاپ سولار انسٹالیشن کے لیے ایک اہم اسکیم شروع کی گئی ہے ۔ مختلف ریاستی حکومتیں ان کی اپنی پالیسیوں کے تحت سولار پاور پراجکٹس کے ساتھ آرہی ہیں ۔ جملہ کمیشنڈ کپاسٹی 14جنوری کو 5129.813mw رہی جس میں آندھرا پردیش کی کپاسٹی 357.34mw اور تلنگانہ کی 342.39mw ر

TOPPOPULARRECENT