Thursday , July 27 2017
Home / شہر کی خبریں / ملک میں موٹاپے کی شرح میں تیزی سے اضافہ

ملک میں موٹاپے کی شرح میں تیزی سے اضافہ

پبلک گارڈن واکرس ایسوسی ایشن کا ہیلتھ لکچر، ڈاکٹر جی سریش چندر ہری کا خطاب

حیدرآباد 2اپریل (سیاست ڈاٹ کام) پبلک گارڈن واکرس ایسوسی ایشن کا ما ہا نہ ہیلتھ لکچربمقام اندرا پریہ درشنی آڈیٹوریم باغ عامہ حیدرآباد میں بصدارت غلام یزدانی سینئر ایڈوکیٹ صدر واکرس ایسوسی ایشن منعقد ہوا۔آڈیو ویڈیو کی مدد سے خطاب کے آغاز میں ڈاکٹر جی سریش چندر ہری سینئر کنسلٹنٹ گیسٹروانٹرولوجسٹ جنرل لیپروسکوپک نے خطاب کرتے ہوئے کہ ہندوستانی وضع قطع قسم کا موٹاپا مغربی ممالک کے موٹاپے سے مختلف ہوتاہے ۔موٹاپے کے مرض کو جانچنے کے لیے مدت وزن قد غذائی عادتوں وغیرہ پر دھیان دینا ضروری ہوتاہے ۔تشخیص میں وزن قد BMI، بلڈ پریشر ، شوگر، تھائیرائیڈ ، جگر کی کارکردگی ، Lupid پروفائیل ، خون کا دوران، گردوں کی کارکردگی ، الٹرا ساؤنڈ کی جانچ ضروری ہوتی ہے ۔علاج میں عمر کا بھی بڑا دخل ہوتاہے ۔ دورانِ علاج مریض کے لیے ڈائیٹ کنٹرول اور تمباکو نوشی ترک کرنا ضروری ہے ۔انہوں نے کہا کہ موٹاپے کی شرح میں ملک میں پچھلے 20سال میں تیزی سے اضافہ ہواہے اور اس کی وجہ طرزِ زندگی میں تبدیلی ہے ۔چٹ پٹی غذائیں بچوں کو اس مرض میں مبتلا کرتی ہیں اور اب یہ بچوں میں 15%ہوگیا ہے ، اس کی وجہ ٹیلی ویژن اور کمپیوٹر گیمس میں زیادہ مشغولیت ہے ۔ موٹاپے کو جانچ کے لیے BMI، وزن اور قد کا خیال کرتے ہوئے کیا جاتاہے ۔ذیابیطس ،تناؤ اور جوڑوں کا درد ، دل کی بیماریاں ، فالج اور بعض قسم کے کینسر موٹاپے کے مریضوں میں ہوتے ہیں۔ غذا میں احتیاط اور ورزش اچھی صحت کے لیے بہت ضروری ہے ۔مسٹر غلام یزدانی چیرمین پبلک گارڈن واکرس ایسوسی ایشن نے خطاب کی اہمیت پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ آج کا خطاب کافی معلومات افزا رہا ہے ۔ سامعین کی کثیر تعداد نے اس آڈیو ویڈیو سہولتوں کے لیس لکچر سے استفادہ کیا ۔مسٹر ابراہیم جیلانی نے موٹاپے سے متعلق آسنوں کا مظاہرہ کیا۔ صبح کی اولین ساعتوں میں دو دہائیوں سے منعقد ہونے والے یہ لکچرس طبی علاج معالجوں کے مختلف شعبہ جات کے ڈاکٹرس کے نہایت ہی ماہرانہ مشوروں کی وجہ سے بھی مشہور ہیں ۔ ان لکچرس میں ایلوپیتھی ، ہومیوپیتھی ، ایورویدک ، یونانی ،نیچروپیتھی ، یوگا وغیرہ کے لکچرس بھی شامل ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT