Friday , October 20 2017
Home / شہر کی خبریں / ملک میں 20 لاکھ سے زائد چیک باؤنس کے مقدمات زیر دوراں

ملک میں 20 لاکھ سے زائد چیک باؤنس کے مقدمات زیر دوراں

مستقبل قریب چیک باؤنس پر جیل منتقلی ، قوانین میں ترمیم ، سختی سے عمل آوری کا عزم
حیدرآباد۔12جون(سیاست نیوز) چیک باؤنس ہونے کی صورت میں اب آپ کو جیل جانا پڑ سکتا ہے۔ حکومت ہند کی جانب سے اس بات پر غور کیا جا رہا ہے کہ چیک باؤنس قوانین میں ترمیم کے ذریعہ مزید سخت کرنے کی تیاری میں مصروف ہے۔ بتایاجاتاہے کہ ملک بھر میں 20لاکھ سے زائد چیک باؤنس کے مقدمات زیر دوراں ہیں اور ان کی تعداد میں بتدریج ہو رہے اضافہ کو روکنے کے لئے کئے جانے والے اقدامات کے طور پر حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ چیک باؤنس قوانین میں ترمیم کی جائے۔ بتایاجاتاہے کہ پارلیمنٹ کے مانسون سیشن کے دوران حکومت ہند کی جانب سے چیک باؤنس ترمیمی قوانین کے متعلق بل پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے گا۔ ماہرین قانون کے مطابق مرکزی وزارت قانون کی جانب سے تیار کئے جانے والے قانون کے مطابق اگر کوئی ناکافی رقم کھاتہ میں رکھتے ہوئے کسی کو چیک کے ذریعہ ادائیگی کرتا ہے تو ایسی صور ت میں اسے غیر ضمانتی دفعات کے تحت مقدمہ درج کرتے ہوئے جیل روانہ کردیا جائے گا۔ بتایاجاتا ہے کہ حکومت کی جانب سے نیگوشیبل انسٹرومنٹ ایکٹ میں ترمیم کے ذریعہ اسے مزید سخت کرنے کا فیصلہ کیا جا چکا ہے تاکہ چیک باؤنس کے مقدمات میں کمی لانے کے علاوہ ادائیگیوں کی صورتحال کو بہتر بنایا جاسکے۔ نئے قوانین کے مطابق ادائیگی میں ناکام شخص (ملزم) کو عدالت میں اسی صورت میں اپنے دفاع کا حق حاصل رہے گا جب وہ ادا شدنی رقم عدالت میں جمع کروائے۔ اسی طرح اس قانون میں کی جانے والی ترامیم کے اعتبار سے میٹروپولیٹین جج اس مقدمہ کی سماعت کریں گے اور قانون کی دفعہ 138کے تحت کی جانے والی شکایت پر کاروائی کے متعلق احکام کی اجرائی کے بعد ہی مقدمات کا اندراج ہوگا علاوہ ازیں شکایت پر مقدمہ درج کرنے سے قبل ہی شکایت کنندہ کو دستاویزات پیش کرنے ہوں گے۔ مرکزی وزار ت قانون کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ ملک میں نقد کے بغیر لین دین کے فروغ کیلئے کئے جانے والے اقدامات میں ان قوانین کو سخت کیا جانا انتہائی ناگزیر ہے اور ان قوانین میں لائی جانے والی سختی کے متعلق مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات سے مشاورت کی جا رہی ہے تاکہ ان قوانین میں ترمیم پر کسی کو کوئی اعتراض نہ ہو اور پارلیمنٹ کے آئندہ مانسون اجلاس کے دوران اس اہم قانون میں ترمیم کے لئے تجاویز کو بل کی شکل میں پیش کیا جاسکے ۔ حکومت کے ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے چیک باؤنس قوانین میں سختی کے فیصلہ اور ترامیم کی کوئی مخالفت نہیں کی جائے گی بلکہ حکومت کو اس بات کا یقین ہے کہ یہ قوانین کی ترمیم میں انہیں تمام سیاسی جماعتوں کی تائید حاصل ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT