Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / ملک کو رشوت ستانی سے پاک بنانے نوٹ بندی پہلا قدم

ملک کو رشوت ستانی سے پاک بنانے نوٹ بندی پہلا قدم

وزیراعظم نریندر مودی کو چیف منسٹر تلنگانہ کے چندرشیکھر راؤ کی نیک تمنائیں

حیدرآباد ۔ 17 ڈسمبر (سیاست نیوز) چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر نے کہا کہ ملک کو کرپشن سے پاک بنانے میں نوٹ بندی پہلا قدم ہے۔ میری نیک تمنائیں وزیراعظم نریندر مودی کے ساتھ ہیں جنہوںنے دلیرانہ فیصلہ کیا ہے۔ وہ ریاست کے عوام کو سلوٹ کرتے ہیں۔ مشکل میں بھی صبر کیا ہے۔ اگلا نشانہ سونا، اراضیات، بنگلے، فلیٹس، شیرمارکٹ، بیرونی کرنسی، منی لینڈ رینگ ہوں گے۔ آئندہ 15 دن میں اسمبلی حلقہ سدی پیٹ کیاش لیس ہوجائے گا۔ جنوری سے ریاست کو کیش لیس بنانے کیلئے خصوصی مہم کا آغاز کیا جائے گا۔ کونسل میں نوٹ بندی پر بیان دیتے ہوئے چیف منسٹر نے کہا کہ نوٹ بندی اہم فیصلہ جو ہر ایک کو آسانی سے سمجھ میں نہیں آتا مگر مستقبل درخشاں ہونے کے قوی امکانات ہیں۔ ہر چھوٹی اسکیم فوری کرپشن میں تبدیل ہوجارہی ہے۔ مثال کے طور پر شادی مبارک اسکیم میں بھی بے قاعدگیاں ہوئی ہیں۔ نوٹ بندی کے بعد کئی نقلی نوٹ منظر عام پر آئے ہیں۔ ڈاکٹر منموہن سنگھ بھی کرنا چاہتے تھے مگر نہ کرسکے لیکن مودی نے دلیرانہ فیصلہ کیا ہے جو تاریخ کے سنہرے پنوں میں تحریر ہوجائے گا۔ کسی بھی چیز کی اندھی تائید و مخالفت نہیں ہونی چاہئے۔ یہ پہلا قدم ہے۔ اگلا نشانہ سونا ہوگا۔ ایک کیلو سونا رکھنے والوں کو کوئی نقصان نہیں ہوگا۔ بسکٹ کی شکل میں سونا ہوگا تو چھین لیا جائے گا۔ شہر کے تین جویلری شاپس نے نوٹ بندی کے 24 گھنٹے میں کروڑہا روپئے کا سونا فروخت کیا ہے۔ بے نامی اثاثہ جات، جائیدادیں، اراضیات، بنگلے، فلیٹس رکھنے والوں کو بخشا نہیں جائے گا۔ شیرمارکٹ کو بھی کلین کیا جائے گا۔ بیرونی کرنسی کو بڑے پیمانے پر خرید لیا گیا ہے۔ اس کا بھی حساب کتاب لیا جائے گا۔ منی لینڈ رینگ کو ختم کیا جائے گا۔ اس کے بعد ہی بینکنگ نظام مستحکم ہوگا۔ چیف منسٹر نے کہا کہ 15 لاکھ کروڑ روپئے نوٹ ہونے کا کوئی سرکاری طور پر اعلان نہیں کیا گیا۔ سب افواہیں اور سنی سنائی باتیں ہیں۔ آنکھ بند کرتے ہی ملک کیاش لیس نہیں ہوگا۔ وزیراعظم کو بھی اس کا اندازہ ہے۔ تاہم وہ دعویٰ کے ساتھ کہہ سکتے۔ تلنگانہ نقد رقمی لین دین سے پاک کے معاملے میں سارے ملک میں سرفہرست رہے گا کیونکہ تلنگانہ میں آئی ٹی ورکرس کی تعداد زیادہ ہے۔ کے سی آر نے کہا کہ ہر ایک کو تبدیلی کی عادت اپنانے کی ضرورت ہے۔ نریندر مودی کی پارٹی سے ان کا کوئی تعلق نہیں ہے۔ اگر کوئی اچھا کام ہورہا ہے تو کیوں غیرضروری اس کی مخالفت کی جائے۔ وہ اپوزیشن سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ عوام کو غیرضروری ڈرانے دھمکانے کی کوشش نہ کریں۔ نوٹ بندی سے تلنگانہ کو معمولی نقصان ہوا ہے۔ ارادہ پکا ہے تو راستہ نکل آتا ہے۔ ان حالات میں جو جلدی جاگ جائے گا وہ فائدہ میں رہے گا۔ ریاست کو بچانے کیلئے کیاش لیس اکنامی کے علاوہ دوسرا کو چارہ نہیں ہے۔ کیاش لیس صرف سوائپنگ مشین تک محدود نہیں ہے۔ چیک کے علاوہ موبائیل فون کے APPS 51 ہیں چور آج بھی ہے کل بھی رہیں گے۔ کیاش لیس سے تمام ٹیکس ختم ہوجائیں گے۔ صرف دو قسم کے ٹیکس بی ٹی ٹی اور جی ایس ٹی رہیں گے۔

TOPPOPULARRECENT