Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / ملک کے ماحول کو شریعت اسلامی کے خلاف بنانے باطل طاقتوں کی کوششیں

ملک کے ماحول کو شریعت اسلامی کے خلاف بنانے باطل طاقتوں کی کوششیں

مسلمانوں کے عائیلی مسائل پر علماء کرام کا اجلاس ، مفتی صادق محی الدین و دیگر کا خطاب
حیدرآباد ۔ 12 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : مسلمانوں کے عائیلی مسائل کے حل کے لیے مسلم شبان کی تحریک پر شہر کے مفتیان ، علماء ، مشائخین ، دینی ملی جماعتیں جماعت اسلامی ہند و تلنگانہ ، جمعیتہ العلماء ہند ، سنی علماء بورڈ اور دیگر تنظیموں و مسلکوں کے قائدین متفقہ طور پر قرار داد منظور کرتے ہوئے اس بات کا فیصلہ کیا تھا کہ موجودہ ناگزیر صورتحال میں شرعی بورڈ کے قیام کو منظوری دی تھی ۔ اس لیے شرعی فیصلہ بورڈ کے قیام کی منظوری اس مقصد کے تحت کہ اللہ کے حدود کو مت پھلانگو ۔ اس لیے آج شرعی فیصلہ بورڈ کے باضابطہ اعلان اور اس کے اغراض و مقاصد اور کام کرنے کے دائرہ کار سے واقف کروانے اور جو صیہونی و فسطائی طاقتیں ملک میں مسلمانوں کے پرسنل لا اور دیگر معاملات میں مداخلت اور وقفہ وقفہ سے طلاق ، طلاق ثلاثہ اور دوسرے موضوعات کو لے کر میدان میں آرہی ہے ۔ اس پر روک لگوانے کے لیے بورڈ اپنے تمام تر قواعد و ضوابط کے ساتھ کام کرے گا ۔ آج یہ بات جناب مشتاق ملک صدر تحریک مسلم شبان و کنوینر شرعی فیصلہ بورڈ نے پریس کانفرنس سے مخاطب کرتے ہوئے کہی جو میڈیا پلس آڈیٹوریم جامعہ نظامیہ کامپلکس عابڈس میں منعقد ہوئی ۔ جس میں شہر کے علماء کرام مولانا مفتی صادق محی الدین فہیم ، مولانا مفتی حسن الدین ، جناب عثمان شہید ایڈوکیٹ ، جناب محمد اظہر الدین ، مولانا مفتی تجمل حسین قاسمی ، جناب سید شاہ نور الحق قادری اور دوسرے موجود تھے ۔ جناب مشتاق ملک نے کہا کہ ایک سونچے سمجھے منصوبے کے تحت ملک کے ماحول کو شریعت اسلامی کے خلاف بنانے کی باطل طاقتیں لگاتار کوشش کررہی ہیں ۔ دراصل ان کی یہ کوشش فرقہ پرست تنظیم آر ایس ایس کے ایجنڈہ کا ایک حصہ ہے ۔ مولانا مفتی صادق محی الدین فہیم نے کہا کہ شریعت کی وضاحت کی کوئی ضرورت نہیں بلکہ یہ تو اللہ کا قانون ہے اور وہ اپنے تمام تر مسائل کو شرعی فیصلہ حاصل کرنے کے لیے شہر کے دارالقضاۃ سے رجوع ہوں اور عدالتوں کے چکر میں نہ پھنسیں جس سے انصاف کے بجائے ذلت و رسوائی کا سامنا کرنا پڑے گا ۔ جناب عثمان شہید ایڈوکیٹ نے اس بورڈ کے قیام کو ایک موثر اقدام قرار دیا اور کہا کہ بورڈ کے فیصلے قانونی طور پر ڈگری کروائے جائیں گے اور یہ بورڈ Under arbitation Act کے تحت کام کرے گا اور مسلمان اس کے ذریعہ اپنی کمائی و محنت کی رقم کو محفوظ کرسکتے ہیں ۔ مولانا مفتی حسن الدین ، مولانا مفتی شفیق عالم ، مولانا مفتی تجمل حسین اور جناب اظہر الدین نے مسلمانوں سے اپیل کی کہ وہ اپنے معاملات کو شرعی فیصلہ بورڈ کے ذریعہ کروائیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT