Saturday , October 21 2017
Home / ہندوستان / ملک گیر سطح پر ذخیرہ اندوزوں کے خلاف دھاوے

ملک گیر سطح پر ذخیرہ اندوزوں کے خلاف دھاوے

نئی دہلی ۔25اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) تقریباً 75ہزار ٹن دالیں ذخیرہ اندوزوں کے گوداموں پر دھاوؤں کے دوران 13 ریاستوں میں ضبط کی گئی ۔ دالوں کی چلر فروش قیمتیوں میں زبردست اضافہ پر قابو پانے کے اقدامات کے ایک حصہ کے طور پر یہ دھاوے کئے گئے تھے جب کہ دال کی قیمت 210/-روپئے فی کلوگرام تک پہنچ گئی تھی ۔ مرکز نے ریاستوں سے خواہش کی ہے کہ وہ دال کی گرنیوں کے مالکین ‘ ہول سیل اور چلر فروش بیوپاریوں سے تبادلہ خیال کر کے واجبی قیمت پر دالوں کی عوام کو دستیابی یقینی بنائیں ۔ انسداد ذخیرہ اندوزی کارروائیاں کئی ریاستوں میں جاری رہیں ۔ جن کے نتیجہ میں 74846.359 ٹن دالیں ضبط کی گئیں ۔ جملہ 6077دھاوے کئے گئے ۔ مرکزی حکومت کے حکم نامے کے بعد جو اشیاء ضروریہ قانون کے تحت جاری کیا گیا ہے یہ کارروائی کی گئی ۔ اس کے نتیجہ میں ریاستوں سے دالوں کی قیمت میں کمی کے رجحان کی اطلاع ملی ہے ۔ سب سے زیادہ مقدار 46397 ٹن دالیں مہاراشٹرا میں ذخیرہ اندوزوں کے پاس سے ضبط کی گئی ۔ دوسرے مقام پر کرناٹک تھا جہاں 8755.34 ٹن دالیں ‘ بہار میں 4933.89ٹن ‘ چھتیس گڑھ میں 4530.39ٹن ‘ تلنگانہ میں 2546ٹن ‘ مدھیہ پردیش میں 2295ٹن اور راجستھان میں 2222ٹن دالیں ضبط کی گئیں۔ دالوں کی قیمت ملک گیر سطح پر اندرون ملک پیداوار میں 20لاکھ ٹن کمی ہونے کی وجہ سے آسمان کو چھونے لگی تھی ۔ علاوہ ازیں سال 2014-15ء میں بارش بھی بہت کم ہوئی ۔ عالمی بازاروں سے دالوں کی سربراہی بھی محدود ہے ۔ مرکز نے ریاستی حکومتوں سے خواہش کی ہے کہ دالوں کے کارخانوں کے مالکین ‘ ہول سیل اور چلر فروش تاجروں سے تبادلہ خیال کریں تاکہ چلر فروشی کے بازاروں میں دالیں واجبی قیمت پر دستیاب ہوسکیں ۔

TOPPOPULARRECENT