Monday , August 21 2017
Home / پاکستان / ممبئی حملہ : پاکستان کی ہندوستان سے گواہوں کی طلبی

ممبئی حملہ : پاکستان کی ہندوستان سے گواہوں کی طلبی

24ہندوستانی گواہوں کی بیانات کیلئے انسداد دہشت گردی عدالت میں پیش کرنے کا حکم
لاہور۔6مارچ ( سیاست ڈاٹ کام) پاکستان نے ہندوستان سے خواہش کی ہے کہ 24ہندوستانی گواہوں کو انسداد دہشت گردی عدالت میں گواہی دینے کیلئے روانہ کیا جائے جس میں ممبئی حملہ کا مقدمہ زیر دوران ہے ۔ اعلیٰ سطحی وکیل استغاثہ چودھری اظہر نے اخباری نمائندوں سے کہاکہ وزارت خارجہ نے حکومت ہند کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے خواہش کی ہے کہ 24ہندوستانی گواہوں کو پاکستان روانہ کیا جائے تاکہ تحت کی عدالت میںجہاں ممبئی حملہ مقدمہ زیر دوران ہے اپنے بیانات درج کروائیں ۔ انہوں نے کہا کہ انسداد دہشت گردی عدالت اسلام آباد پہلے ہی تمام پاکستانی گواہوں کے اس مقدمہ میں بیانات درج کرچکی ہے جو گذشتہ 6سال سے زیادہ عرصہ سے زیر سماعت مقدمہ ہے ۔ اب ہندوستان کی ذمہ داری ہے کہ تمام ہندوستانی گواہوں کو جو ممبئی دہشت گرد حملہ کے مقدمہ کے سلسلہ میں ہندوستان میں گواہی دے چکے ہیں پاکستان کو بیانات دینے کیلئے روانہ کرے تاکہ سماعت کرنے والی عدالت ان کے بیانات ریکارڈ کر کے مقدمہ میں پیشرفت کرسکے ۔ چودھری اظہر نے جو خصوصی وکیل استغاثہ برائے مرکزی محکمہ سراغ رسانی بھی ہیں گذشتہ ماہ کہا تھا کہ عدالت 7ملزمین بشمول ممبئی دہشت گرد حملہ کے کلیدی سازشی لشکر طیبہ کے کارگذار کمانڈر ذکی الرحمن لکھوی کے خلاف مقدمہ کی سماعت کررہی ہے اوراس نے حکم دیا ہے کہ تمام 24ہندوستانی گواہوں کو عدالت پر پیش ہونے کی ہدایت دی جائے تاکہ اپنے بیانات درج کرواسکے ۔ عدالت نے یہ بھی حکومت دیا ہے کہ اجمل قصاب اور دیگر عسکریت پسندوں کے ارکان خاندان کو پاکستان طلب کیا جائے تاکہ جائیداد کے ایک مقدمہ کا تصفیہ ہوسکے اور ان سے ضروری جرح کی جاسکے ۔ 8رکنی پاکستانی عدالتی کمیشن پاکستانی انسداد دہشت گردی عدالت کی نمائندگی کرتے ہوئے قبل ازیں ہندوستان کا دورہ کرچکا ہے ۔ہندوستانی گواہ اس مقدمہ میں بطور عینی گواہ طلب کئے گئے ہیں ۔
اس شہر کی آبادی دو کروڑ ہے‘ مزید تفصیلات فوری طور پر دستیاب نہیں ہوسکیں ۔ پولیس نے ماضی میں مقامی ذرائع ابلاغ کی خبروں پر کوئی تبصرہ کرنے سے انکار کردیا تھا کہ اغوا کنندوں نے 20کروڑ نائیرا بطور زرتاوان طلب کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT